پاک فوج کے عظیم میجرجنرل جنہوں نے اہم ملکی راز کو اپنی جان پر فوقیت دی

اس مٹی کے بیٹوں نے اس مٹی کوہمیشہ اپنے خون سے زرخیز کیا ہے وطن عزیز پر جب بھی مشکل وقت آیا ہے اس ملک کے جوانوں نے وطن عزیز کے دفاع میں ہزاروں جانیں قربان کی ہیں چاہے کبھی کوئی جنگ ہو یا پھر کوئی آپریشن اور یا پھر کوئی دہشت گرد پاک فوج ہمیشہ پیش پیش رہی ہے پاک فوج کے صرف جوانوں نے ہی نہیں بلکہ پاک فوج کے افسروں نے بھی اس ملک کی حفاظت اور سالمیت کے لیے جانیں دی ہیں پاک فوج دنیا کی واحد فوج ہے جس کے افسروں کی شہادتیں دنیا کی کسی بھی فوج کے افسروں سے زیادہ ہیں 

میجر جنرل مقصود عباسسی پاک فوج کے وہ عظیم سپاہی ہیں جن کی بہادری پر ہمیشہ اس قوم کو فخر رہے گا میجر جنرل مقصود عباسی پاک فوج کے انتہاہی اہم ترین عہد وں پر تعینات رہے ہیں میجر جنرل مقصود عباسی نے ہر مقام پر وطن عزیز کا عظیم طریقہ سے دفاع کیا انہوں نے ہر محاذ پر ملک دشمن عناصر کو شکست سے دو چار کیا اور پاکستان کو بنانے میں اپنا اہم کردار ادا کیا 
وطن عزیز کا دفاع میں مشغول میجر جنرل مقصود عباسی بیمار ہو گیے لیکن انہوں نے اپنی بیماری کی بلکل بھی پرواہ نہیں کی اور اپنے فرض سے بلکل بھی غافل نہیں ہوئے اور وطن عزیز کی خدمت میں مصروف رہے مسلسل بیماری سے لاپرواہی برتے ہوئے بیماری شدت اختیار کر گی اور بیماری نے جلد ہی مکمل طور پر آپ کو اپنے شکنجے میں جکڑ لیا بیماری کی نوبہت یہاں تک آ پہنچی کے میجر جنرل مقصود عباسی بستر مرگ جا پہنچے ڈاکٹروں نے میجر جنرل مقصود عباسی کو علاج کے لیے امریکہ جانے کی تجویز دی   
میجر جنرل مقصود عباسی نے وہ تاریخ ساز الفاظ کہے جو کسی بھی محب وطن پاکستانی کے لیے مشعل راہ ہیں میجر جنرل مقصود عباسی نے کہا کہ افواج پاکستان میں اہم ذمہ داریوں میں تعینات رہا ہوں میرے سینہ میں دفاع وطن کہ اہم راز موجود ہیں اور جب امریکا علاج کے لیے جاؤ جاؤ گا تو وہاں ادویات کہ اثرات سے میری دھرتی کے اہم راز مجھ سے افشاء ہو سکتے ہیں میں نہیں چاہتا کہ میں اپنی جان کہ عوض اپنی دھرتی کہ راز افشاء کروں اور یوں انہوں  نے خدا کی  جانب سے دی ہوئی سانسیں پاک سر زمین پر ہی پوری کیں ایسے عظیم انسان قوموں اور نسلوں کے لیے مثال ہوتے ہیں 
کاش ہمارے سیاست دان بھی ملک و قوم کے لیے یہی جذبہ رکھتے اور بیرون ملک سے اپنی دولت اور کاروبار پاکستان لے آتے تو آج سارے پاکستانی خوشحال ہوتے الله پاک انکی مغفرت کرے