پاک فضائیہ کی پہلی شہید خاتون فلائنگ افسر مریم مختار

پاکستان ایئر فورس کی پہلی شہید خاتون فلائنگ آفیسر مریم مختارکی آج تیسری برسی منائی جارہی ہے۔ وہ 18 مئی 1992کوکراچی میں پیدا ہوئیں، ابتدائی تعلیم ملیر کینٹ کے سکول اور کالج سے حاصل کی۔ بعدازاں مئی 2011 میں پاک فضائیہ کے 132ویں جی ڈی پائلٹ کورس میں شمولیت اختیار کی۔ 

مریم مختار پاک فضائیہ کی شہید ہونے والی پہلی خاتون پائلٹ ہیں مریم مختار بچپن سے ہی بہت بہادر اور نڈر تھی مریم مختار کو شروع سے ہی پاکستان ایئر فورس میں جانے کا شوق تھا مریم مختار کا کوئی بھائی نہیں تھا ان کی والدہ کو بیٹے کی بہت خواہش تھی لیکن مریم نے بیٹوں سے بھر کر کام کیا اور رہتی دنیا تک اپنے ماں باپ کا سر فخر سے بلند کر دیا

مریم مختار اپنی ٹریننگ کے آخری مراحل میں تھیں کہ وہ اپنے ٹرینر کے ہمراہ جہاز کی ڈرائیو میں گیی کہ جہاز میں کوئی فنی خرابی پیدا ہو گیی اور جہاز قابو سے باہر ہو گیا لیکن یہاں میں مریم اور ان کہ ٹرینر کو دو مسائل کہ تھا ایک جہاز قابو سے باہر اور دوسرا نیچے آبادی کی حفاظت کا بھی مسلہ تھا مریم نے تب جہاز کو آبادی سے دور لے گے اور طیارے سے نیچے چھلانگ لگا دی مریم کے ٹرینر تو شدید زخمی ہو گیے لیکن ان کی جان بچ گیی لیکن مریم نے جام شہادت نوش کر لیا اور پاکستان کی خاتون پائلٹ شہید ہونے کا اعزاز اپنے نام کر لیا