امریکہ نے اسرائیل کو ایٹمی پاکستان پر حملے کیلئے گرین سگنل دے دیا

"امریکہ نے اسرائیل کو ایٹمی پاکستان پر حملے کیلئے گرین سگنل دے دیا"
یہ خبر پڑھ کر مجھے وہ بات گدگدا رہی ہے کہ ایک بار ایک ہرن کے بڑے بچے نے ماں سے کہا " اماں میں نے دیسی بکرا کھانا ہے" ماں کا منہ کھلے کا کھلا رہ گیا اور اس نے اپنے بچے کو زوردار دبکا مار کر کہا: آہستہ بول بیٹا لوگ تو تیرے شوربے کو ترستے پھر رہے ہیں
امریکہ کے پروں کے نیچے پرورش پانے والے اسرائیل نے کب سے شور مچایا ہوا تھا کہ میں نے پاکستان سے چھیڑ چھاڑ کرنی ہے اور امریکہ ہر بار اسے سمجھاتا تھا کہ بیٹا ہم نے تو پتہ نہیں کس طرح تجھے فلسطین شام اور عراق جیسے ممالک سے بچایا ہوا ہے اور تو چھیڑ چھاڑ کرنا چاہتا ہے اس ملک سے جس سے چھیڑ خانی کی سزا ہم پچھلے پندرہ سال سے بھگت رہے ہیں ؟
یہ تو تھی گدگدانے والی بات لیکن درج بالا خبر کی حقیقت کچھ یوں ہے کہ پاکستان کیخلاف جو محاذ امریکہ، بھارت، اور افغانستان سمیت دیگر نیٹو ممالک نے کھو لے ہوئے ہیں اس کی پلاننگ اور فنانسنگ یہودی لابی کرتی ہے۔ امریکہ نے سونپے گئے حدف کی تکمیل کے لئے یعنی پاکستان کو نقشے سے مٹانے کے لئے مرحلہ وار جنگ شروع کی اور فنڈنگ اسرائیل اور دیگر یہودی لابی کرتی رہی۔ مرحلہ وار جنگ میں امریکہ نے بھارت کی مدد سے سب سے پہلے پاکستان کی سیاسی ایلیٹ کو خریدا پھر براۓ نام leading media groups کی خریدو فروخت کی۔ 
اتنا پیسہ سیاسی لوگوں میں بانٹا کہ اس کے بعد پاکستانی سفیر بھی امریکہ کی ایماءپر لگاۓ جانے لگے۔ قصۂ مختصر کہ ساری دنیا میں پاکستان کا امیج یہ بن گیا کہ اس ملک کی ہر چیز ہر ادارہ اور انسان فار سیل ہے سواۓ ایک ادارے کے۔ 
اسرائیل نے تجوریوں کے منہ کھول دئیے پاکستان کے سربراہان کی بھارتی خفیہ ایجنسی راء کے چیف اور آرمی چیف سے امریکہ میں ملاقاتیں کروائی گئیں ایجنڈا ایک ہی تھا " پاکستان کے نا قابل تسخیر اور نا قابل فروخت ادارے کو خریدو یا پھر کالی بھیڑیں اس میں داخل کرو۔ 
جب اس میں بری طرح ناکامی ہوئی تو ایجبڈا تھوڑا تبدیلُ کیا گیا کہ اس ادارے کوبد نام کیا جاۓ۔ میمو گیٹ ، الطاف کی خرافات ڈان لیکس اور پھر منظور پشتین کی ہرزہ سرائی لانچ کی گئی۔ نتیجہ صفر۔ کیونکہ پاکستان کےجس ادارہ کو یہ ممالک تباہ کرنا چاہتے ہیں اس کا نام ہے پاک آرمی جس کا خمیر لا الہ الا اللہ کے نور سے گوندھا گیا گیا ہے، اس ادارے کی روحانی حفاظت شیر خدا حیدر کرار حضرت علی رضی اللہ عنہ کے ذمے ہے، یہ دنیا کی واحد فوج ہے جس کا ہر سپاہی میدان میں نکلنے سے پہلے سجدے میں گر کر صرف ایک دعا مانگتے ہیں یا اللہ مجھے فتح عطا فرمانا یا پھر اس ملک کی حفاظت میں شہادت عطا فرمانا پھر میں یہ سمجھوں گا ٹھکانے لگا سرما یاۓ تن۔ 
اب میں آتا ہوں واپس اس خبر کی طرف کہ امریکہ نے اسرائیل کو ایٹمی پاکستان پر حملے کا عندیہ دے دیا حقیقت اس کے الٹ ہے ، پے در پے ناکامیوں پر جب اسرائیل نے امریکہ سے ڈو مور کا مطالبہ کیا تو ذہنی طور پر شکست خوردہ اور عملی طور پر پاکستان کو صفحۂ ہستی سے مٹانے کےنام پر یہودیوں کے بلینز آف ڈالر ہڑپ کر جانے والے امریکہ نے اسرائیل کو دھمکی دی "کہ پھر اسرائیل خود لڑ لے جا کر پاکستانی فوج سے" 
لیکن اسرائیل اور امریکہ کے محب وطن میڈیا نے آپس کی اس چپقلش کا فائدہ کسی بھی صورت حریفوں کو نہ دیتےہوئے اس خبر کو انٹرنیشنل میڈیا کے سامنے یوں رکھا کہ : امریکہ نے اسرائیل کو ایٹمی پاکستان کے ایٹمی اثاثوں پر حملے کے لیئے گرین سگنل دے دیا۔
کاش ہمارا میڈیا بھی اتنا محب وطن اور سمجھدار ھوجاۓ۔
(سوشل میڈیا پر اپنی فوج کا مورال بلند رکھنے کی کاوشوں میں ہر پاکستانی اپنا حصہ ڈالے تاکہ سوشل میڈیا پر بیٹھے ہوۓ راء کے ایجنٹوں اور سی آئی اے کے کارندوں اورموساد کے چیلوں تک یہ تحریر اس ثبوت کے طور پر پہنچے کہ پاکستان کا ہر عام و خاص آدمی اپنی فوج کے پیچھے نہیں بلکہ فوج کی پہلی صف سے بھی آگے کھڑے ہیں اور ہر الزام کے تیرکو اپنے قلم کی نوک تلے روند نے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔