عالمی اقتصادی فورم اجلاس کا آج سے آغاز، وزیراعظم بھی شرکت کریں گے

سوئٹزرلینڈ کے شہر ڈیوس میں عالمی اقتصادی فورم کا اجلاس تین روز تک جاری رہے گا، جہاں اِن دنوں موسم انتہائی سرد ہے—۔فوٹو/ بشکریہ ورلڈ اکنامک فورم ٹوئٹر اکاؤنٹ عالمی اقتصادی فورم اجلاس کا آغاز آج (23 جنوری) سے سوئٹرز لینڈ کے شہر ڈیووس میں ہورہا ہے، جہاں پاکستان کی نمائندگی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کریں گے۔ سوئٹزرلینڈ کے شہر ڈیووس میں عالمی اقتصادی فورم کا 48 واں اجلاس تین روز تک جاری رہے گا۔ اجلاس کے دوران 70 سے زائد ملکوں کے سربراہان، 38 سے زائد عالمی تنظیموں کے سربراہ جبکہ سیاست، کاروبار اور دیگر شعبوں سے تعلق رکھنے والے 3 ہزار سے زائد افراد بھی شرکت کریں گے۔ پاکستانی وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ڈیووس میں کل سے اپنی مصروفیات کا آغاز کریں گے۔ عالمی اقتصادی فورم میں شرکت کے دوران وزیراعظم شاہد خاقان عباسی عالمی بینک، بین الاقوامی مالیاتی فنڈ، ایشیائی ڈیولپمنٹ بینک، اسلامی ترقیاتی بینک کے سربراہوں کے علاوہ دیگر ممالک کے صدور اور وزرائے اعظم سے اہم ملاقاتیں کریں گے جن کے دوران دوطرفہ اقتصادی تعاون کو نئی بلندیوں تک لے جانے کے بارے میں ثمرآور تبادلہ خیال ہوگا۔ آئی ایم ایف کے منیجنگ ڈائریکٹر نے گزشتہ روز ورلڈ اکنامک فورم سے خطاب کے دوران یہ پیش گوئی کی تھی کہ پاکستان کی جی ڈی پی گروتھ 18-2017 میں بہت بڑھے گی اور پاکستان کی معیشت 2013 کی نسبت 2018 میں نئی بلندیوں پر پہنچے گی۔ اس فورم میں ترقی، استحکام اور صنعت سمیت مختلف موضوعات پر بات کی جائے گی۔ نوبیل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی بھی فورم کے ایک سیشن میں شریک ہوں گی۔ عالمی اقتصادی فورم میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی بھی شریک ہوں گے اور آج شام کے سیشن میں خطاب کریں گے جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ بھی فورم کے آخری روز یعنی جمعے کو اختتامی خطاب کریں گے۔ واضح رہے کہ ڈیووس میں اِن دنوں موسم انتہائی سرد ہے اور برفباری نے معمولاتِ زندگی کو متاثر کر رکھا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎