سی پیک منصوبہ پاکستان کو مہنگا پڑنے لگا

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 اگست2018ء) ترقی و خوشحالی کا ضامن سمجھا جانے والا سی پیک منصوبہ پاکستان کو مہنگا پڑنے لگا ہے۔ مسلم لیگ ن کے 5 سال دور حکومت میں چین کے لئے برآمدات 35 فیصد کم ہوئیںجبکہ درآمدات ڈیڑھ گنا اضافے سی16 ارب ڈالر تک پہنچنے سے پاکستان کا چین کے ساتھ تجارتی خسارہ 14 ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ حکوم ت کے پانچ دور میںپاک چین اقتصادی راہداریمنصوبے کے متعلق کئے گئے بہت سے دعوے جھوٹے ثابت ہو رہے ہیں پاکستان کی ترقی و خوشحالی کی ضمانت قرار دیاجانے والا سی پیک منصوبہ زحمت بننے لگا ہے۔ملک میں ہر طرف چینی سامان بڑھنے سے مقامی مصنوعات کی بے قدری ہوتی نظر آ رہی ہے موبائل فون ، مشینری سے لے کر پالسٹک اور لوہے تک سب کچھ چین سے آ رہا ہے نہ پاکستان سے کوئی میٹریل خریدا جا رہا ہے اور نہ ہی کسی پاکستانی کو اس منصوبے میں نوکری مل رہی ہے مسلم لیگ ن کی حکومت کے گزشتہ پانچ برس میں چین کے لئے پاکستانی برآمدات میں 35 فیصد کمی واقع ہوئی اس کے برعکس ملک میں چینی سامان کی درآمدات ڈیڑھ گنا بڑھ کر 16 ارب ڈالر تک پہنچنے سے پاکستان کا چین کے ساتھ سالانہ تجارتی خسارہ 14 ارب ڈالر سے تجاوز کر چکا ہے۔

<iframe title="3rd party ad content" name="google_ads_iframe_/21678054/urdupoint_outstream_0" width="1" height="1" scrolling="no" frameborder="0" srcdoc=""></iframe>
<iframe title="3rd party ad content" name="google_ads_iframe_/21678054/up_1x1_0" width="1" height="1" scrolling="no" frameborder="0" srcdoc=""></iframe>
آئندہ حکومت کے لئے قابل غور بات ہے کہ پاکستان کی سرزمین پر بننے والے منصوبے میں پاکستانیوں کو زیاد ہ سے زیادہ نوکریاں ملنی چاہئیں نہ کہ ہماری قوم صرف چوکیداری پر مامور رہے۔ 

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎