پی آئی اے کی پی ایس ایکس کو نادہندگان کی فہرست سے نام نکالنے کی درخواست

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز (پی آئی اے) نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) کو اپنا نام نادہندگان کی فہرست سے نکالنے کے فیصلے پر نظر ثانی کے لیے باقاعدہ طور پر درخواست دائر کر دی۔

ترجمان پی آئی اے کے مطابق نے قومی ایئرلائنز نے اپنی درخواست میں پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو قواعد و ضوابط کی مکمل یقین دہانی کراتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا اجلاس اکتوبر کے آخری ہفتے جبکہ حصص یافتگان کا سالانہ عمومی اجلاس نومبر کے آخری ہفتے میں منعقد کیا جا ئے گا۔

ان کے مطابق پی آئی اے نے امید ظاہر کی کہ یقین دہانی کے بعد اس کی نظر ثانی کی درخواست پر مثبت طور پر غور کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان اسٹاک ایکسچینج پی آئی اے کو 31 دسمبر 2017 کو اختتام پذیر ہونے والے سال میں سالانہ اجلاس نہ بلانے اور اکاؤنٹس کا سالانہ آڈٹ جمع نہ کروانے پر نادہندگان کی فہرست میں ڈال دیا تھا۔

پی ایس ایکس کی جانب سے جاری نوٹی فکیشن میں کہا گیا تھا کہ قانون کے مطابق اگر کوئی کمپنی سالانہ اجلاس نہ بلائے یا مالی سال کے لیے سالانہ اکاؤنٹس آڈٹ جمع نہ کروائے تو اسے نادہندگان کی فہرسدت میں ڈال دیا جاتا ہے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق پی آئی اے کو پی ایس ایکس ریگولیشنز کی دفعات 5.11.1 (سی) اور (ڈی) کے تحت 10 اکتوبر 2018 کو نادہندگان کی فہرست میں ڈالا گیا۔

حکم نامے کے بعد اسٹاک ایکسچینج میں پی آئی اے کے حصص کی خرید و فروخت 90 دن تک معطل رہے گی۔

خیال رہے کہ قومی ایئر لائن نے 2 سال سے سالانہ اکاؤنٹس کی تفصیلات جمع نہیں کروائیں۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎