آسیہ بی بی کی رہائی ... چیف جسٹس کے تاریخی الفاظ

آسیہ بی بی کی رہائی کے بعد مملکت خداداد میں پیدا ہونے والی صورت حال بے قابو دیکھائی دیتی ہے جس کا اندازہ چیف جسٹس کو بھی سمجھ آتا دیکھائی دیتا ہے


چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ایمان کسی کاکم نہیں ہے،ہم نے جو حکم جاری کیا ہے اس کی ابتدا کلمے سے کی ہے، ہم نے فیصلہ اردو میں اسی لیے جاری کیا تاکہ اسے قوم پڑھ سکے ۔ ہم صرف مسلمانوں کے قاضی نہیں ہیں لیکن اگر کسی کے خلاف کیس بنتا ہی نہ ہو تو سزا کیسے دیں؟ ۔ جس بنچ نے آسیہ بی بی کا فیصلہ دیا وہ بھی کم عاشق رسول ﷺ نہیں ہے ، کچھ جج صاحبان تو بیٹھے درود پاک ہی پڑھتے رہتے ہیں۔ نبی کریم ﷺ پر ایمان کے بغیر دین مکمل نہیں ہوتا، ہم نے اللہ تعالیٰ کو نبی کریمﷺ کے ذریعے پہچانا۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ لوگوں کو ہمارا فیصلہ پڑھناچاہیے،رسول پاک ﷺ کی توہین کسی کےلئے قابل برداشت نہیں ہے ، نبی پاک ﷺ کی ناموس پر ہم اپنی جانیں قربان کرنے کیلئے بھی تیار ہیں، ریاست امن و امان کیلئے اپنی ذمے داری پوری کرے جیسارات وزیراعظم نے بھی کہا ہے ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎