چیف جسٹس نے اعظم سواتی کو سبق سکھانے کی ٹھان لی

آئی جی تبادلہ کیس کی سماعت کے دوران آئی جی جان محمد اور متاثرہ خاندان عدالت میں پیش ہواجس دوران چیف جسٹس نے انتہائی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے اعظم سواتی سے استعفیٰ طلب کر لیا ۔متاثرہ خاندان کے سربراہ نے سپریم کورٹ میں بیان دیا کہ صلح ہو گئی ہے جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ فریقین کے درمیان صلح کو تسلیم نہیں کرتے ، اعظم سواتی کا جرم ریاست کے خلاف ہے ، غریب کے ساتھ بدمعاشی کسی صورت بھی قبول نہیں کی جائے گی ۔


چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہ فوجداری قانون کے مطابق غیر مساوی لوگوں میں صلح نہیں ہو سکتی ، اعظم سواتی نے غریبوں پر ظلم کیا۔

چیف جسٹس کا کہناتھا کہ اعظم سواتی میں اتنی انا ہے کہ آئی جی ہی تبدیل کروا دیا ، تسلیم کریں کہ زیادتی کی ہے ورنہ سخت قانونی کارروائی کا سامنا کرنا ہو گا ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎