پارٹی پرکچھ لوگوں کا قبضہ ,مجھ سے جان چھڑانے کی کوشش بہت پہلے سے جاری ہے:فاروق ستار

ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا ہے کہ پارٹی پر کچھ لوگوں کا قبضہ ہے اور مجھ سے جان چھڑانے کی کوشش بہت پہلے سے جاری ہے،رابطہ کمیٹی اپنے فیصلوں سے کارکنوں میں اپنا اعتماد کھو چکی ہے، پارٹی کے لاکھوں کارکنان ان تمام فیصلوں کو مسترد کرتے ہیں،میں نے کسی کی دم پرپا ﺅ ں نہیں رکھا ہے جو لوگ تلملا رہے ہیں ۔کراچی میں انسداد دہشت گردی کی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ مجھ سے جان چھڑانے کی کوشش بہت پہلے سے جاری ہے، عامر خان اور کنور نوید بتائیں کہ ان کے کتنے اثاثے ہیں؟انہوں نے کہا کہ پارٹی اور رابطہ کمیٹی میں کچھ لوگوں کا قبضہ ہے، تنظیم کے نظریے اور منشور پر نقصان ہو رہا ہے، رابطہ کمیٹی اپنے فیصلوں سے کارکنوں میں اپنا اعتماد کھو چکی ہے۔ فاروق ستار کا کہنا تھا کہ اب ایم کیو ایم میں انٹرا پارٹی الیکشن ہونے چاہئیں، پارٹی کے لاکھوں کارکنان ان تمام فیصلوں کو مسترد کرتے ہیں، ہم سیاسی و جمہوری طریقے سے پارٹی چلانا چاہتے ہیں، میں نے کسی کی دم پرپا ﺅ ں نہیں رکھا ہے جو لوگ تلملا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ 23 اگست کے بعد سربراہی سنبھالی تو پتا چلا کہ پارٹی میں کیا کچھ ہو رہا ہے، سب کو بارہا سمجھایا کہ آپ لوگ انسان بن جائیں۔میڈیا سے گفتگو کے دوران لیاری کی ایک خاتون فاروق ستار کے پاس دہائی دینے چلی آئی اور مدد کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ بیٹےکو پولیس نے جھوٹے مقدمے میں پکڑا ہے، اسے چھڑوا دیں۔خاتون کی دہائی پر فاروق ستار نے اپنی روداد سناتے ہوئے کہا کہ میرا تو اپنا کیس چل رہا ہے میں کیا مدد کروں، ہم پر تالی بجانے کا کیس بنا دیا گیا ہے، ہم نے پاکستان زندہ آباد کا نعرہ لگایا تب بھی کیس بن گیا۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

?>