پاکستان اور آئی ایم ایف کے پالیسی سطح پر مذاکرات پیر کو ہونگے

بیل آؤٹ پیکج پرمذاکرات کے لیے آئی ایم ایف ٹیم پاکستان میں موجود ہے جبکہ نئے قرض پروگرام کیلئے آئی ایم ایف کی کڑی شرائط کا مرحلہ آن پہنچا ہے۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے پالیسی سطح کے مذاکرات پیر سے شروع ہونگے۔ وزیرِ خزانہ اسد عمر مذاکرات میں پاکستانی معاشی ٹیم کی قیادت کریں گے۔ آئی ایم ایف نے سی پیک کے قرضوں سمیت تمام تفصیلات مانگ لی ہیں۔امکان ہے کہ آئی ایم ایف کی جانب سے روپے کی قدر میں مزید کمی کا مطالبہ کیا جاسکتا ہے۔

اس کے علاوہ بجلی، گیس مزید مہنگی کرنے،سبسڈی کےخاتمے کی شرط کا بھی امکان ہے۔ قرضوں کی مینجمنٹ اور تجارتی پالیسی کے اہداف بھی دیئے جائیں گے۔واضح رہے کہ بیل آؤٹ پیکج پر پاکستان آئی ایم ایف مذاکرات کا عمل 20 نومبر تک جاری رہے گا۔ آئی ایم ایف ٹیم اسد عمر کےعلاوہ صوبائی وزرائے خزانہ سے بھی ملاقات کرے گی۔ آئی ایم ایف پروگرام کے تحت صوبوں کی مالیاتی پالیسی پر مذاکرات ہوں گے۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

?>