اردن، سعودی عرب اور کویت میں شدید بارشیں،ژالہ باری ، 12 افراد ہلاک

عمان: اردن، سعودی عرب اور کویت میں شدید بارشوں کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں اردن میں اب تک 12 افراد ہلاک ہوگئے ۔عرب میڈیا رپورٹس کے مطابق اردن کے مختلف شہروں میں موسلا دھار بارشوں کی وجہ سے اب تک 12 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں جبکہ تاریخی مقامات پر موجود سیاحوں کو بھی محفوظ مقامات پر منتقل کردیا گیا ۔اردنی حکام نے لوگوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ سیلاب سے بچنے کیلئے حفاظتی اقدامات کریں اور ہوسکے تو نقل مکانی کرجائیں۔اردن کے رائل کورٹ نے اسے قومی سانحہ قرار دیتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ سیلاب میں ہلاک ہونے والے افراد کے غم میں قومی پرچم تین دن کے لیے سرنگوں رہےگا۔محکمہ موسمیات نے آنے والے دنوں میں مزید بارشوں کی پیش گوئی کی ہے جبکہ تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل معطل کرکے وہاں عارضی کیمپس بنائے گئے ۔سعودی عرب میں شدید بارشوں سے ڈیمز میں 80 لاکھ مکعب میٹر پانی بھرگیاسعودی عرب میں گزشتہ 3 روز سے جاری شدید بارشوں کے باعث ڈیمز میں 80 لاکھ مکعب میٹر پانی کا اضافہ ہو گیا ۔سعودی وزارت ماحولیات و پانی و زراعت نے ٹوئٹر کے اپنے اکاﺅنٹ میں بتایا ہے کہ ملک کے مختلف علاقوں میں گزشتہ تین روز سے شدید بارشوں کا سلسلہ جاری ہے جس کے باعث ڈیمز میں 80 لاکھ مکعب میٹر پانی کا اضافہ ہوگیا ۔رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں 223 ڈیمز ہیں، سب سے زیادہ پانی مدینہ منورہ کے ڈیمز میں جمع ہوا جو 40 لاکھ مکعب میٹر پانی ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ دوسرا نمبر حائل کے ڈیم کا ہے جہاں 14 لاکھ مکعب میٹر پانی ریکارڈ کیا گیا ۔سعودی دارلحکومت ریاض میں سیلابی ریلا متعدد گاڑیاں بہا لے گیا، سڑکیں اور انڈر پاس تالاب بن گئے ہیں جبکہ ریاض ائیرپورٹ بھی بارش کی زد میں آگیا ۔ کویت میں بھی گزشتہ کئی دنوں سے موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ جاری ہے اور بارشوں سے ہونے والے نقصانات کی وجہ سے پبلک ورکس کے وزیر نے استعفی دے دیا ۔کویت میں کابینہ نے موسم کی خراب صورتحال کے پیش نظر تمام وزارتوں اور سرکاری محکموں میں تعطیل کا اعلان کیا ۔کویت کے وزیر تعلیم کی جانب سے جاری بیان میں تمام تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل معطل رکھنے کا اعلان کیا گیا۔ کویت کی قومی فضائی کمپنی کے مطابق کویت ائیرپورٹ سے کوئی پرواز منسوخ نہیں کی گئی۔کویت کی سرکاری خبررساں ایجنسی کے مطابق وزارت داخلہ نے اپنے طور پر شہریوں اور مقیم افراد سے اپیل کی ہے کہ وہ بلا ضرورت ہر گز گھر سے باہر نہ نکلیں کیوں کہ مرکزی شاہراہوں پر کئی فٹ پانی جمع ہوگیا ہے۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

?>