چین کا ایک روبوٹ ٹیلی ویژن کا نیوز اینکر بن گیا

چین کے شہر ویزین میں ایک ٹیلی ویژن پر اے آئی اینکر نامی روبوٹ پہلی بار خبریں پڑھتے ہوئے دیکھا گیا۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق اے آئی کی تیاری میں چین کے سرکاری خبر رساں ادارے شنہوا اور ایک ٹیک کمپنی سوگو نے مل کر کام کیا ہے۔

اسے پہلی بار ویزین میں ہونے والی ورلڈ انٹرنیٹ کانفرنس میں پیش کیا گیا، جسے خبریں پڑھتے دیکھ کر وہاں سے گزرنے والوں کے قدم رک گئے۔

نیوز اینکر روبوٹ پر چین کے ایک معروف نیوز اینکر شی او ہوا کا مصنوعی چہرہ لگا کر اسے کالا سوٹ اور سرخ ٹائی پہنائی گئی ہے اور وہ خبریں پڑھتے ہوئے شی او کے انداز کی نقل کرتا ہے۔

اے آئی کی جو پہلی ویڈیو ریلز ہوئی ہے، اس میں ٹی وی اسکرین پر یہ الفاظ بھی لکھے ہیں کہ آج اس کا پہلا دن ہے۔

نیوز ایجنسی نے بتایا کہ نیا نیوز اینکر تھکے بغیر کام کرے گا اور جیسے جیسے خبریں ٹائپ ہوتی جائیں گی، وہ کسی وقفے کے بغیر آپ کو سناتا جائے گا۔

اے آئی روبوٹ انسانوں جیسا ہے۔ وہ سوٹ پہنتا ہے، ٹائی لگاتا ہے۔ حتی کہ نظر کی عینک بھی پہنتا ہے تاکہ پڑھا لکھا اور مدبر دکھائی دے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ وہ آپ کو ایک لمحے کے لیے بھی یہ احساس نہیں ہونے دیتا کہ وہ انسان نہیں ہے۔ وہ ہو بہو نیوز اینکروں کی طرح خبریں پڑھتے ہوئے پلکیں جھپکتا ہے۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

?>