پائلٹ کی چھوٹی سی غلطی نے بھارتی حکام کی دوڑیں لگوا دیں

نئی دہلی سے قندھار جانے والی افغان ایئر لائن میں پائلٹ سے انجانے میں ہائی جیک کا بٹن دبنے سے ہنگامہ برپا ہوگیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق کنٹرول روم میں ہائی جیک کا الارم بجتے ہی بھارتی سیکیورٹی فورسز کی دوڑیں لگ گئیں اور مسافروں میں کھلبلی مچ گئی۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ افغان ایئرلائن میں 124 مسافروں سمیت 9 افراد پر مشتمل عملہ شامل تھا تاہم مقررہ وقت سے 2 گھنٹے کے بعد ایئر لائن کو پرواز کی اجازت دی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ ہائی جیک کا بٹن دبتے ہی انسداد دہشت گردی نیشنل سیکیورٹی گارڈ (این ایس جی) سمیت دیگرایجنسیاں متحرک ہو گئی اور انہوں نے طیارے کے گرد گھیرا ڈال دیا۔

بیورو آف سول ایوی ایشن سیکیورٹی (بی سی اے ایس) کے اعلیٰ حکام نے بتایا کہ جب تسلی ہو گئی کہ پائلٹ سے ہائی جیک کا بٹن غلطی سے دبا تھا تو طیارے کو پرواز کی اجازت دی گئی۔

اس حوالے سے انہوں نے مزید بتایا کہ واقعہ کے بعد تمام مسافروں کے سامان کو دوبارہ کلیئرنس کے مراحل سے گزارا گیا۔

افغان پائلٹ نے روکھائی نیامی نے تحریر نوٹ میں واضح کیا کہ ’آج دہلی میں ہمارے عملے نے آگاہ کیا کہ ہوائی جہاز کو اغوا کیے جانے کا امکان ہے‘۔

پائلٹ نے متن میں کہا کہ ’کاک پٹ میں، میں نے اپنے فسٹ افسر کو بتایا کہ اگر ہائی جیکنگ کا واقعہ پیش آتا ہے تو بس یہ والی کوڈنگ کرنی ہے اور کچھ دیر میں ایئر پورٹ کی اے ٹی سی نے ہوائی جہاز کو گھیرے میں لے لیا، تب تک بہت دیر ہو چکی تھی‘۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

?>