تیسری مرتبہ شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر جاری

اسلام آباد: اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے ایونِ زیریں کے سیشن کے لیے مسلم لیگ (ن) کے صدر اور رکن پارلیمنٹ شہباز شریف کے تیسری مرتبہ پروڈکشن آرڈر جاری کردیے۔


اسپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے اپوزیشن کی درخواست پر ایوانِ زیریں کا سیشن بلایا گیا ہے جس میں حکومت کی جانب سے قومی احتساب بیورو (نیب) کی مدد سے مخالفین کے سیاسی انتقام سمیت دیگر اہم مسائل پر بات چیت کی جائے گی۔

اپوزیشن کی جانب سے 88 ممبران کے دستخط کے ساتھ درخواست اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے پاس رکھی گئی تھی، جس کے ساتھ 5 نکاتی ایجنڈا بھی پیش کیا گیا تھا۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کے لیے نیب کے استعمال، حکومتی 100 روزہ کارکردگی، ملکی معاشی صورتحال بالخصوص مہنگائی اور بڑھتی ہوئی غربت، پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) اور ملک میں امن و امان کی صورتحال پر بات چیت کی جائے گی۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر کی گرفتاری کے بعد سے لے کر اب تک قومی اسمبلی کے 2 سیشنز منعقد ہوچکے ہیں اور اسپیکر قومی اسمبلی نے دونوں ہی مرتبہ ان کے پرڈکشن آرڈر جاری کیے تھے۔

پہلی مرتبہ گرفتاری کے فوری بعد مسلم اپوزیشن کی جانب سے اسپیکر قومی اسمبلی کو شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کی درخواست کی تھی۔

گزشتہ دونوں مرتبہ مسلم لیگ (ن) کے صدر نے ایوان میں اپنی تقریر کے دوران نیب کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ بیورو اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کا آپس میں گٹھ جوڑ ہے۔

انہوں نے الزام عائد کیا تھا کہ نیب صرف پاکستان مسلم لیگ (ن) اور اس کے لوگوں کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے فعال ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎