ملک میں تبدیلی کیسے آئے گی؟ مولانا طارق جمیل نے لا جواب بات کہہ ڈالی

معروف دینی سکالرمولانا طارق جمیل نے کہا ہے کہ تبدیلی سب سے پہلے اپنی ذات سے شروع ہوتی ہے ملک کو بدلنے کے لیے خود کو بدلنا بہت ضروری ہے .


ہمیں اپنے بچوں کو سچائی کا راستہ دکھانا چاہے.ہمیں اپنی زندگی اسلام کے اصولوں کے مطابق گزارنی چاہیے.

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مولانا طارق جمیل کا کہنا تھا کہ تبدیلی کوئی ’’چھو منتر ‘‘ نہیں اور نہ ہی کسی کو ڈنڈے کے زور پر سچ کے راستے پر لایا جا سکتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ آج پورے ملک میں سچائی اور دیانتداری نہیں ہےیہاں چھوٹی چھوٹی باتوں پر لڑائی جھگڑے ہیں.

ان کا کہنا تھا کہ تبدیلی کے لئے بہت بڑی محنت کی ضرورت ہے ورنہ یہ کوئی ’’چھو منتر ‘‘ تو ہے نہیں کہ ایک دم سے تبدیلی آجائے اور نہ ہی کسی کو زبردستی ڈنڈے کے زور پر سچ کے راستے پر لایا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ علما کی ذمہ داری ہے کہ امت کو فرقہ واریت سے نکالیں  ہر مکتبہ فکر کے خطیب حضرات اتنے جوشیلے ہیں کہ وہ دوسروں کو کافر ٹھہرانا ہی اپنی ذمہ داری سمجھتے ہیں ،اللہ ان کو سمجھ دے تاکہ وہ پیغام محبت کو عام کریں ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎