مسلم لیگ ن سب سے زیادہ امیر سیاسی جماعت

الیکشن کمیشن نے سیاسی جماعتوں کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کردیں، سابق حکمران جماعت مسلم لیگ ن امیر ترین،پیپلز پارٹی دوسرے اور حکمران تحریک انصاف تیسرے نمبر پر براجمان جبکہ تحریک لیبک پاکستان( ٹی ایل پی) کے اثاثوں کی مالیت صرف 30 ہزار 250 روپے سامنے آئی ہے۔


الیکشن کمیشن نے اراکین پارلیمنٹ اور سیاسی جماعتوں کے مالی سال 2016-17 کے اثاثوں کی تفصیلات جاری کردیں ،وزیراعظم عمران خان کے اثاثوں کی مالیت 3 کروڑ 86 لاکھ 94 ہزار سے زائد ہے۔

دستاویزات کے مطابق اس دوراینے میں مسلم لیگ ن 22 کروڑ 21 لاکھ 16 ہزار 406 روپے کے اثاثوں کے ساتھ امیر ترین جماعت رہی، قائد حزب اختلاف شہباز شریف 27 کروڑ کے اثاثوں کے مالک ہیں۔

پیپلز پارٹی کے اثاثوں کی مالیت 16 کروڑ 52 لاکھ 84 ہزار 423 روپے جبکہ پیپلز پارٹی پارلیمنٹرینز 7 کروڑ 92 لاکھ روپے کے اثاثوں کی مالک ہے۔

دستاویزات کے مطابق موجود ہ حکمران جماعت تحریک انصاف جو اس وقت اپوزیشن میں تھی، اس کے اثاثوں کی مالیت 11 کروڑ 64 لاکھ 24 ہزار 836 روپے ہے۔

دستاویزات میں مسلم لیگ ق کے اثاثوں کی مالیت 5 کروڑ 81 لاکھ 480 روپے درج ہے، وزیر دفاع پرویز خٹک 28کروڑ ،کیپٹن(ر) صفدر 87 کروڑ 48 لاکھ کے اثاثوں کے مالک ہیں۔

الیکشن کمیشن کی دستاویزات کے مطابق سابق وزیراعلیٰ پنجاب اور اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے شریف پولٹری فارمز، شریف ڈیری فارمز کوالٹی چکن اور رمضان شوگر ملز کے شیئرز خریداری کی تفصیلات دیں۔

سابق وزیر اعلی خیبر پختون خوا پرویز خٹک 28 کروڑ، 65 لاکھ روپے کے اثاثوں کے مالک ہیں،انہوں نے پلاٹس، مکان، اپارٹمنٹس، کمرشل بلڈنگز میں سرمایہ کاری،زرعی زمین، شاپنگ پلازوں میں بطورشئیر ہولڈرز سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔

سابق وزیر اعلی بلوچستان ثناء اللہ زہری کے 37 کروڑ 80 لاکھ 98 ہزار روپے سے زائد کے اثاثے ہیں۔

وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کی جون 2017 تک اثاثوں کی کل مالیت 36کروڑ 24 لاکھ 85 ہزار روپے سے زائد تھی۔

سینیٹر مشاہد اللہ خان 3 کروڑ،راجہ ظفر الحق 4 کروڑ،سلیم مانڈوی والا 3 کروڑ،رضا ربانی 10 کروڑ، سینیٹر شیری رحمٰن 77 کروڑ، فروغ نسیم 17 کروڑ، غلام بلور 20 کروڑ اور حمزہ شہباز 41 کروڑ سے زائد کے اثاثوں کے مالک ہیں۔

دستاویزات کے مطابق وفاقی وزیر مملکت شہر یار آفریدی 1 کروڑ 59 لاکھ، کیپٹن ریٹائرڈ صفدر 87 کروڑ کے مالک ہیں مگر ان کے ذمہ حسن نواز کے 2 کروڑ 89 لاکھ، 33 ہزار کے واجبات بھی ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎