نجم سیٹھی اوروقاریونس میں تنازعہ شدت اختیارکرگیا،ایک دوسرے کو کرارے جواب

پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کے سابق چیئرمین نجم سیٹھی بورڈ کے سربراہ کے عہدے سے ہٹنے کے بعد متعدد حلقوں نے ان سے منہ موڑ لیا اور اب سابق کپتان و کوچ وقار یونس کی سیٹھی کے بیان پر ان سے ٹھن گئی ہے۔

حال ہی میں ایک نجی ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں نجم سیٹھی نے کہا کہ لوگوں نے مجھے مشورہ دیا تھا کہ وقار یونس کو کوچ مقرر نہ کریں لیکن میں نے ایسا نہیں کیا البتہ ان کی کارکردگی اس معیار کی نہیں رہی جو ہونی چاہیے تھی اور انہوں نے الٹا مجھ پر ہی تنقید شروع کردی جس کی وجہ مجھے نہیں معلوم۔

اس موقع پر انہوں نے پی سی بی کی نئی مینجمنٹ کی جانب سے قائم کردہ کرکٹ کمیٹی کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ چیئرمین کرکٹ کمیٹی محسن حسن خان گزشتہ 8سال سے وسیم اکرم پر تنقید کرتے رہے ہیں لیکن اب احسان مانی کے کہنے پر خراب ساکھ کے حامل کرکٹرز کے حوالے سے ان کا دل یکدم صاف ہو گیا۔

نجم سیٹھی نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انکشاف کیا کہ جب وہ چیئرمین پی سی بی بنے تو محسن خان نے ان سے رابطہ کیا اور چیف سلیکٹر یا ہیڈ کوچ بنانے کی درخواست کی جس پر مجھے لوگوں نے مشورہ دیا کہ ان چلے ہوئے کارتوسوں کو نہ لیں لیکن مجھے لگتا ہے کہ کرکٹ میں سفارشی ٹولہ آ گیا ہے۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎