سانحہ ماڈل ٹاﺅن کیس، سپریم کورٹ میں ایسا کیا ہوا کہ طاہرالقادری رونے لگے؟

سپریم کورٹ میں سانحہ ماڈل ٹاون کیس کی سماعت کے دوران شہدا کے تذکرے پر عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری آبدیدہ ہوگئے۔

سانحہ ماڈل ٹاون کے کیس میں نئی جے آئی ٹی کی تشکیل کیلئے درخواست پرسماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ کر رہا ہے۔ کیس کی سماعت کے آغاز میں عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری روسٹرم پرآئے اور دلائل دیے۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ درخواست گزار بسمہ کی والدہ اور عزیزہ میرے دروازے پر شہید ہوئیں لیکن ساڑھے 4 سال سے انصاف نہیں ملا۔ آپ نے بنچ تشکیل دے کر غریبوں کی داد رسی کی ، بنچ تشکیل دینے پر عدالت کو خراج تحسین پیش کرتاہوں۔ملزمان کی حکومت میں انصاف کا امکان بھی نہیں تھا،محسوس کرتا ہوں کہ انصاف کا دروازہ کھل گیا ہے ۔ شہدا کے ورثا میرے پاس آ کر روتے ہیں۔ سانحہ ماڈل ٹاﺅن کے شہدا کا ذکر کرتے ہوئے طاہرالقادری آبدیدہ ہوگئے۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎