پاکستانی بچوں کو آئل ٹینکر میں ڈال کر ایران اسمگل کرنے کا انکشاف

پاکستانی بچوں کو آئل ٹینکر میں ڈال کر ایران اسمگل کرنے کا انکشاف ہوا ہے، مقامی این جی او کا دعویٰ ہے کہ بچوں کو مردان، پشاور، نوشہرہ اور وزیرستان سے اغواء کیا گیا ہے۔ ویڈیو سامنے آنے کے بعد بے قرار والدین نے نجی این جی او سے رابطہ کرلیا۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ روتے بلکتے بچوں کو ٹینکر سے نکالا جارہا ہے، یہ بچے کون ہیں؟ اور انہیں ٹینکر میں کس نے ڈالا تھا؟، نجی تنظیم کے ڈٓائریکٹر شہنام خان نے دعویٰ کردیا کہ یہ بچے پاکستانی ہیں، جنہیں اغواء کرکے ایران لے جایا گیا اور اب یہ بچے ایرانی بارڈر کے پار موجود ہیں۔

وہ کہتے ہیں کہ میرے اندازے کے مطابق 50 سے زائد بچے ہیں، زیادہ تر بچے پٹھان ہیں، پشاور، کوہاٹ، نوشہرہ، مردان سے بچوں کو اغواء کرکے اسمگل کیا جارہا ہے۔

ویڈیو وائرل منظر عام پر آئی تو مردان، پشاور، نوشہرہ اور وزیرستان سے والدین نے رابطہ کیا، جن کے بچے لاپتہ تھے۔

مردان کی فرشتے نور 7 ستمبر کو لاپتہ ہوئی، ویڈیو دیکھ کر بچی کے گھر والوں نے بھی نجی تنظیم سے رابطہ کیا ہے۔

بچی کے چاچا نثار خان کا کہنا ہے کہ بچی کی تصویر دیکھ کر والدین، دادی سمیت دیگر اہل خانہ نے اسے پہچان لیا۔

آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎