کراچی کینٹ ریلوے اسٹیشن، بنیادی سہولیات سے محروم

جب وزیر نے بتایا کہ 31 ریلوے سٹیشنوں کو اپ گریڈ کیا جا رہا ہے اور کم گریڈ کے ملازمین کے لئے اپارٹمنٹ کی تعمیر کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے مسافروں کے لئے پیشکش پر کسی بھی نئی سہولیات کا ذکر نہیں کیا


زیادہ تر مسافر اپنے ٹرینوں کے انتظار کے لئے پلیٹ فارم پر موجود ٹوٹے ہوئے بینچ پر بیٹھتے ہیں وہ نہیں جانتے کہ آخری منٹ میں اعلان کر دیا جاۓ کہ ٹرین کس پلیٹ فارم پر آ رہی ہے اسٹیشن پر بہت کم لوگ موجود ہیں جو انتظار کے لیے کمرے کا استعمال کرتے ہیں کمروں کی ابتر حالت کی وجہ سے مسافر انتظارگاہ کا استعمال نہیں کرتے ہیں

ایک پلیٹ فارم سے دوسرے میں جانے کا بھی ایک مسئلہ ہے جب کوئی بچے یا بزرگ افراد کے ساتھ سفر کر رہا ہو اور ایک پلیٹ فارم سے دوسرے میں جانا ہو تو بھی یہ ایک بہت بڑا مسلہ ہے سٹیشن میں کوئی لفٹ نہیں ہے جو کہ بزرگ شہریوں کے کام آ سکے

سی  سی ٹی وی کیمرے بھی صرف نام کے بھی صرف نام کے ہی لگے ہوئے ہیں جو کہ کسی کی نشاندہی کرنے کے لیے نا کافی ہیں اور اینٹرانس میں میٹل ڈٹیکٹر بھی کسی میٹل کی چیز کی نشاندہی نہیں کرتے ہیں

کراچی سے سکر، راولپنڈی، لاہور اور میانواالی اور فکسنگ ٹرینوں کی نئی ٹرینیں چلا دی گیی ہیں لیکن ان کے ساتھ ساتھ مسافروں کے لیے سہولیات میں بھی اضافہ ہونا چاہیے اور اس سلسلے میں بہت کام کرنے کی ضرورت ہے صاف پانی، لفٹ، پارکنگ ایریا، آرام گاہ, سیکورٹی وغیرہ ان سب کو بھی بہتر کرنے کی ضرورت ہے



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎