فرانس: کرسمس مارکیٹ میں فائرنگ سے تین افراد ہلاک

فرانس کے مشرقی شہر اسٹراس برگ میں واقع کرسمس مارکیٹ میں فائرنگ کے ایک واقعے میں تین افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں.


حکام کے مطابق منگل کی شب پیش آنے والے واقعے کے بعد شہر میں سکیورٹی انتہائی سخت کر دی گئی ہے اور شہریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے گھروں میں رہیں۔

حملے کو کئی گھنٹے گزر جانے کے باوجود پولیس تاحال مشتبہ حملہ آور کو تلاش کر رہی ہے۔

دریائے رہائن کے کنارے آباد تاریخی شہر اسٹراس برگ میں فائرنگ کے بعد سرحد پار دریا کے دوسرے کنارے پر جرمن پولیس نے بھی سکیورٹی سخت کر دی ہے اور فرانس سے آنے والے ٹریفک کی سخت جانچ پڑتال کی جا رہی ہے۔

پولیس نے 29 سالہ مشتبہ حملہ آور کو چیرف چیکٹ کے نام سے شناخت کیا ہے جو اسٹراس برگ کا ہی رہائشی ہے۔ انٹیلی جنس سروسز کے مطابق ملزم کے بارے میں پہلے سے سکیورٹی خدشات موجود تھے۔

ملزم نے منگل کی شام اسٹراس برگ کے تاریخی کرسمس بازار میں اس وقت فائرنگ کی تھی جب بازار بند ہو رہا تھا۔ فائرنگ سے تین افراد ہلاک اور 12 زخمی ہوگئے تھے۔

فرانس کے نائب وزیرِ داخلہ لوغاں نونیز کے مطابق فائرنگ کے بعد حملہ آور اور سکیورٹی فورسز کے درمیان کم از کم دو مقامات فائرنگ کا تبادلہ بھی ہوا تھا جس کے دوران گمان ہے کہ وہ زخمی ہوا ہے۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم کی تلاش کے لیے جاری آپریشن میں 600 اہلکار حصہ لے رہے ہیں جنہیں ہیلی کاپٹروں کی مدد بھی حاصل ہے۔

لوغاں نونیز نے صحافیوں سے گفتگو میں تصدیق کی ہے کہ مشتبہ ملزم کا ریکارڈ پولیس کے پاس تھا اور وہ متعدد بار جیل جا چکا تھا۔ ملزم آخری بار 2015ء کے اواخر میں جیل گیا تھا۔

نائب وزیرِ داخلہ کے مطابق ملزم کی مذہبی سرگرمیوں کی نگرانی کی جا رہی تھی مگر انھوں نے کہا کہ حملے کے مقاصد کے بارے فی الحال کوئی بات کرنا قبل از وقت ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎