امریکا کو کس ملک کو بلیک لسٹ کرنا چاہیےِِ، وزیر خزانہ اسد عمر نے بتا دیا

وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ اگر کسی ملک کو بلیک لسٹ کرنا چاہیے تو وہ بھارت ہے جہاں صرف گائے کا گوشت لے جانے پر قتل کردیا جاتا ہے۔


امریکا نے پاکستان کے ساتھ نفسیاتی کھیل شروع کردیا،پہلے مذہبی آزادیوں کی خلاف ورزی کا الزام لگاکر بلیک لسٹ میں ڈالا،پھر امریکی قومی مفادکا کہہ کر ممکنہ معاشی پابندیوں سے استثنیٰ دیدیا۔

دفتر خارجہ نے پاکستان نے امریکی الزام مسترد کیا اور امریکا کے سینئر سفارت کار کو دفتر خارجہ طلب کرکے شدید احتجاج کیا۔

اسد عمر نےامریکا کی طرف سے پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کئے جانے پر کہا کہ ’اگر کسی ملک کو بلیک لسٹ کرنا چاہیے تو وہ بھارت ہے جہاں صرف گائے کا گوشت لے جانے پر قتل کردیا جاتا ہے۔

دوسری طرف وزیر خزانہ نے برطانوی نشریاتی ادارے کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ بلوچستان میں دہشت گردی کے واقعات بھارت کرا رہا ہے،ان واقعات میں ملوث افراد کو باہر سے تربیت ملتی ہے،ان کی فنڈنگ کی جاتی ہے۔

اسد عمر نے یہ بھی کہا کہ بھارت بلوچستان کو عدم استحکام سے دو چار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے اور اس کے ذریعے پاک، چین اقتصادی راہداری کو نقصان پہنچانے کی سازش کی جارہی ہے۔

آسیہ مسیح کے ملک سے باہر جانے کے بارے میں کئے گئے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ اس بارے میں عدالت سے فیصلہ ہونا باقی ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎