کوئی اس پوزیشن میں نہیں کہ چین کے لوگوں کو ڈکٹیٹ کرسکے: شی جن پنگ

بیجنگ: چینی صدر شی جن پنگ نے خبردار کیا ہے کہ چین کو معاشی ترقی کے لیے کمیونسٹ پارٹی کی جانب سے دی گئی سمت پر کوئی ڈکٹیٹ نہیں کرسکتا۔


چین اپنی ایک پارٹی نظام سے انحراف نہیں کرے گا اور کسی ملک سے احکامات نہیں لے گا، چینی صدر کا کمیونسٹ پارٹی کی 40 سالہ تقریب سے خطاب کے دوران بیان۔

کمیونسٹ پارٹی کی جانب سے معاشی ترقی کے 40 سال مکمل ہونے پر کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس سے خطاب کرتے ہوئے چینی صدر نے کہا کہ چین اپنی ایک پارٹی نظام سے انحراف نہیں کرے گا اور کسی ملک سے احکامات نہیں لے گا جب کہ سوشل ازم کا عظیم پرچم چین کی سرزمین پر ہمیشہ سربلند رہے گا۔

چینی صدر نے کہا کہ کمیونسٹ پارٹی کی قیادت سوشل ازم کے لیے انتہائی اہمیت کی حامل ہے اور چینی کردار کے باعث سوشلسٹ سسٹم نے عظیم کامیابی حاصل کی۔

صدر شی جن پنگ نے امریکا کا نام لیے بغیر کہا کہ چین کو کسی بھی ملک سے خطرہ نہیں اور چین کو اپنی مرضی کے مطابق نہیں دھکیلا جاسکتا، کوئی اس پوزیشن میں نہیں کہ چین کے لوگوں کو یہ ڈکٹیٹ کراسکے کہ انہیں کیا کرنا چاہیے اور کیا نہیں کرنا چاہیے۔

چینی صدر نے اپنے خطاب کے دوران اصلاحات کا وعدہ کیا لیکن انہوں نے کسی تفصیلات کا ذکر نہیں کیا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎