حکومت 5 ماہ کے اندر ہی ناکام ہوچکی، شاہد خاقان عباسی

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے تحریک انصاف کی حکومت 5 ماہ کے اندر ہی ناکام ہوچکی ہے۔ آج گھروں میں گیس نہیں ہے جبکہ وزیراعظم آج 50 لاکھ گھروں اور 5 کروڑ نوکریوں کی بات بھی نہیں کرتے۔


ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر مسلم لیگ ن کے رہنما مفتاح اسماعیل بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ مفتاح اسماعیل گزشتہ حکومت میں نواز شریف کے مشیر خزانہ تھے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ موجودہ حکومت کے پاس کوئی معاشی پالیسی نہیں ہے۔ تحریک انصاف کی حکومت پانچ ماہ کے دوران نام ہوچکی ہے۔ گھروں میں گیس نہیں ہے جبکہ قرضوں کے سارے ریکارڈ بھی ٹوٹ چکے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ گیس بحران پر ایم ڈی کو غلط سزا دی گئی ہے۔ ایم ڈی کا گیس بحران سے کوئی تعلق نہیں ہوتا۔ سوئی ناردرن اور سوئی سدرن گیس کمپنیاں وہی گیس تقسیم کرتی ہیں جو ان کو حکومت کی جانب سے فراہم ہوتی ہے۔

چوہدری نثار سے رابطہ منقطع ہونا بدقسمتی ہے، شاہد خاقان عباسی

انہوں نے کہا کہ این آر او نہ کوئی مانگ سکتا ہے نہ کوئی دے سکتا ہے۔ این آر او صرف آمر دیتے ہیں جن کی نظر میں قانون کی کوئی حیثیت نہیں ہوتی۔ وزیر سے جو مانگا گیا وہ این آر او نہیں کچھ اور تھا، انہیں غلط فہمی ہوگئی۔ نواز شریف نے عدالتوں کا سامنا کیا۔ مزید بھی قانونی جنگ لڑیں گے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ افراط زر کے باعث حکومت کے اخراجات بھی برھ گئے ہیں۔ عوام مزید مہنگائی اور ٹیکسوں کا بوجھ برداشت کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔

اس موقع پر مفتاح اسماعیل نے کہا کہ اس حکومت میں صرف نام کی تبدیلی آئی ہے، ہماری حکومت نےاسٹیٹ بینک سے 288 ارب روپے قرض لیا تھا۔ اس حکومت نےاسٹیٹ بینک سے 1400ارب روپے قرضہ لیا ہے۔ پہلے 6 ماہ میں ایک ہزار ارب روپے کا خسارہ ہوچکا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎