’شہبازشریف کو ہٹانے کا فائدہ نہیں‘

رہنما مسلم لیگ خواجہ آصف نے کہا ہے کہ شہبازشریف کوپی اےسی کی چیئرمین شپ سےہٹانے کا فائدہ نہیں ہو گا،حالات بگڑیں گے ۔


سیالکوٹ میں اپنی رہائشگاہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا کہ ہم بھی اس نظام کو منجمد کر سکتے ہیں مگرنظام کو خطرہ ہے،ہمیں تحفظات ہیں پھر بھی چاہتے ہیں نظام چلے۔بیورکریسی کو کام نہیں کرنے دیا جارہا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان جو 22سال تک کہتے رہےاس پر عمل درآمد نہیں کیا،اکنامک ایڈوائزز عمران خان کو چھوڑ کر جا رہے ہیں،پہلی مرتبہ ایک وزیراعظمآئی ایم ایف کے پاس جارہاہے،انہوں نے کہا تھا کہ آئی ایف کے پاس جانے سے بہتر ہے خودکشی کرلوں۔

خواجہ آصف نے کہا کہ ایک وزیرکہہ رہا تھا کہ کلبھوشن کو بھیج دیا گیا ہے،جیسا وزیراعظم ویسے ہی وزیر۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نوٹ چھاپ رہی ہے،اب تک چودہ سو ارب چھاپ چکی ہے،خارجہ پالیسی بھی درست سمت میں نہیں،ڈر ہے کہ دیرینہ دوست کہیں ہم سے ناراض نہ ہو جائیں۔

سابق وزیر خارجہ نے کہا کہ این آر او صرف وزیراعظم کی ہمشیرہ کو ملا ہے،حکومت میاں نواز شریف کی بیماری کا فائدہ اٹھانا چاہتی ہے، دل کے مرض کے لیے ڈاکٹر کے بورڈ کی رائے کو تسلیم کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کے لہجے سے محسوس ہوتا ہے کہ وہ انتہائی پریشان ہیں، چھ ماہ میں حکومت نے صرف پرانے منصوبوں پر تختیاں لگائی ہیں،سیاسی لوگ ہر وقت الیکشن کے لیے تیار رہتے ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎