نندی پور پاور پراجیکٹ کیس، بابر اعوان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

احتساب عدالت نے نندی پور پاور پراجیکٹ کیس میں بابر اعوان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا، فیصلہ 20 فروری کو سنایا جائے گا۔


احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نندی پور پاور پراجیکٹ کیس میں بابر اعوان کی بریت کی درخواست پر سماعت کی۔

سابق وزیر قانون بابر اعوان نے درخواست پر دلائل دیتے ہوئے کہا کہ دو سمریاں وزارت قانون کو بھجوائی گئیں مگر اُس وقت وہ وزیر نہیں تھے، نیب نے جو ریفرنس دائر کیا اُس کو جس طرح مرضی پڑھیں لیکن میرا نام کہیں نہیں۔

نیب کو نندی پور پاور پراجیکٹ میں کرپشن کی تحقیقات کا حکم

نیب پراسیکیوٹر نے جوابی دلائل دیتے ہوئے کہا کہ بابراعوان کے دور میں وزارت قانون کی جانب سے مسلسل عدم تعاون کا رویہ رہا۔ ایک بندے کی وجہ سے ریاست کو کروڑوں کا نقصان ہو جائے اور وہ کہے میں نے کچھ نہیں کیا؟ ہمارے پاس اُن کے خلاف 37 گواہان موجود ہیں۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا جس کو 20 فروری کو سنایا جائے گا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎