قاضی واجد کو مداحوں سے بچھڑے ایک برس بیت گیا

پاکستان کے نامور اداکار قاضی واجد کو مداحوں سے بچھڑے ایک برس بیت گیا۔ پاکستان ٹیلیوژن کے ناظرین ان کی سحر میں مبتلا کردینے والی اداکاری آج تک نہیں بھولے ہیں ۔


اضی واجد کا اصل نام قاضی عبدالواجد انصاری تھا۔ جاندار اداکاری اور کمال ڈائیلاگ ڈلیوری کے ساتھ پاکستان کے نامور اداکار قاضی واجد نے جو کردار بھی ادا کیا، کمال کر دکھایا۔

قاضی واجد 26 مئی 1943 کو لاہور میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے 1956 میں ریڈیو پاکستان سے اپنے فنی سفر کا آغٓاز چائلڈ صداکار کی حیثیت سے کیا ۔ ریڈیو سے نشر ہونے والا اُن کا پروگرام ’قاضی جی کا قاعدہ‘ جلد ہی ہر گھر میں سنے جانے لگا۔ پھر 1966 میں ٹیلی ویژن انڈسٹری میں آئے تو یہاں سے شہرت کا سفر شروع ہوا ۔

متعلقہ خبر: نامورفنکارقاضی واجد انتقال کرگئے

قاضی واجد نے طویل فنی کیرئیر میں 500 سے زائد ڈرامہ سیریلز میں مختلف کردار اداکیے۔

ان کہی، حوا کی بیٹی، چاند گرہن، تنہائیاں ، دھوپ کنارے اور خدا کی بستی میں ان کے نبھائے گئے کرداروں کو کون بھول سکتا ہے ۔ خدا کی بستی ٹیلیوژن پر ان کا پہلا ڈرامہ تھا جس میں انہوں نے راجہ کا کردار نبھا کر اس کو اَمر کردیا۔

سال 1988 میں قاضی واجد کو پرائیڈ آف پرفارمنس سے بھی نوازا گیا ۔ انہیں بہترین اداکار کے ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔

متعلقہ خبر: قاضی واجد کا انتقال، فنکار برادری غم سے نڈھال

ایک سال قبل ، اِسی روز ( 11 فروری 2018 کو) 87 برس کی عمر میں قاضی واجد دل کا دورہ پڑنے سے جہانِ فانی سے کوچ کر گئے اور اپنے مداحوں کو افسردہ چھوڑ گئے ۔

سما سے گفتگو میں قاضی واجد کے بھائی نےبتایا کہ انہیں بخار تھا مگر صحتیابی کے بعد دو دن قبل انہوں نے ڈرامے کی ریکارڈنگ میں بھی حصہ لیا تھا۔ صبح ان کی طبیعت بگڑنے پر ملازمہ نے اطلاع دی جس پر انہیں فوری طور پر اسپتال لے جایا گیا جہاں وہ جانبر نہ ہو سکے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎