سابق بھارتی چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو کا ہندو مذہب سے اختلاف سامنے آگیا

بھارتی سابق چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو—.فائل فوٹو/ بشکریہ فیس بک


بھارتی سپریم کورٹ کے سابق چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ہندو مذہب سے اختلاف کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نہ تو رام خدا ہے اور نہ ہی گائے کسی کی ماتا (ماں) ہے۔

سابق بھارتی چیف جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ایک پروگرام میں شرکت کے دوران کہا کہ ذرا سوچیے کہ کوئی گائے کسی کی ماتا کیسے ہوسکتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پوری دنیا میں لوگ بیف (گائے کا گوشت) کھاتے ہیں، میں نے خود بھی بیف کھایا ہے۔

اس سے قبل رواں برس جنوری میں بھی انہوں نے مودی سرکار کے خلاف بات کرتے ہوئے لوک سبھا الیکشن میں کامیابی کے لیے فسادات کرائے جانے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارت میں انسان گائے کے غلام بن چکے ہیں۔

گذشتہ دنوں بھارتی شہر دہرادھن میں منعقدہ ایک پروگرام میں شرکت کے دوران بھی جسٹس مرکنڈے کاٹجو نے ایک متنازع بیان دیا تھا، جس سے ہندو انتہا پسند بھڑک اٹھے تھے۔

انہوں نے کہا تھا، ’رام ایک شہزادہ اور ایک انسان تھا، وہ کوئی خدا نہیں تھا، ایسے ہی گائے کبھی ماتا نہیں تھی، وہ بھی بِلّی، کُتے کی طرح ایک جانور ہے‘۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎