سعودی عرب پاکستان میں سب سے بڑی سرمایہ کاری کو تیار

سعودی عرب پاکستان میں تاریخ کی سب سے بڑی سرمایہ کاری کرنے کے لیے تیار ہے، سعودی ولی عہد سولہ فروری کو دو روزہ دورے پر اسلام آباد پہنچیں گے۔ شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کے دوران دس ارب ڈالر کی آئل ریفائنری اور دیگر سمجھوتوں پر دستخط کیے جائیں گے۔


سی پیک کے بعد پاکستان میں سب سے بڑی غیر ملکی سرمایہ کاری سعودی عرب کرر ہا ہے۔ گوادر میں جو سی پیک کے ذریعے پاکستانی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی بننے جا رہا ہے، پاکستان کی تاریخ کی سب سے بڑی ریفائنری تعمیر کی جائے گی۔

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اپنے دورے میں اہم معاہدوں پر دستخط کریں گے۔ خام تیل صاف کرنے کے اس کمپلیکس پر دس ارب ڈالر سرمایہ کاری کا امکان ہے۔

آئل ریفائنری کے قیام سے پاکستان کو زرمبادلہ کی مد میں 7 ارب ڈالر سالانہ بچت ہوگی جبکہ گوادر خطے میں تیل کی تجارت کا مرکز بن جائے گا۔ نئی آئل ریفائنری سے پاکستان میں تیل صاف کرنے کی یومیہ صلاحیت پانچ لاکھ بیرل یومیہ تک پہنچ جائے گی۔

سعودی عرب اور عرب امارات کی جانب سے 12 ارب ڈالر کے امدادی پیکیج اور 10 ارب ڈالر کی آئل ریفائنری سمیت اگلے تین سال میں مجموعی سرمایہ کاری کا حجم 25 سے 30 ارب ڈالر ہو جائے گا۔

چین کی طرح سعودی عرب کو بھی پاکستان میں سرمایہ کاری پر ٹیکس استثنیٰ ملے گا۔

مستقبل قریب میں معدنیات، پائپ لائن اور پیٹرولیم کے ذخیرے کی تعمیر میں بھی سرمایہ کاری کی تجویز ہے، پائپ لائن بننے کے بعد سعودی عرب سے چین تیل کی ترسیل کا دورانیہ 40 سے کم ہوکر 7 دن رہ جائے گا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎