پی ایم اے نے ٹائیفائیڈ بخار سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیر جاری کردیں

خون میں موجود میٹابولک مارکرز جن کے ذریعے عام بخار اور ٹائیفائید بخار میں فرق کیا جاتا ہے۔فوٹو کریڈٹ؛ڈرگ ٹارگٹ ریویو ڈاٹ کام


کراچی : پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن (پی ایم اے) نے ٹائیفائیڈ سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر جاری کردیں۔

حیدرآباد سے سامنے آنے والا ’سوپر بگ ٹائیفائیڈ‘ دنیا کیلئے خطرہ بن گیا

پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے مطابق سندھ میں مہلک ٹائیفائیڈ کی وباء سے 2016 سے اب تک 8 ہزار کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں جن میں کراچی پہلے، حیدرآباد دوسرے اور سانگھڑ تیسرے نمبر پر ہے۔

اعلامیے میں بتایا گیا ہےکہ ٹائیفائیڈ بخار کا بیکٹیریا کے ذریعے آلودہ پانی سے پھیلتا ہے، اس میں مریض کوتیز بخار، پیٹ میں درد، الٹی، سر درد ، کھانسی اور بھوک نہ لگنےکی شکایات ہوتی ہیں۔

اعلامیے میں شہریوں کو ایکس ڈی آر ٹائیفائیڈ سے بچاؤ کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا گیا ہےکہ پانی کا ابال کا استعمال کریں اور بازار میں فروخت کی جانے والی برف استعمال نہ کریں۔

کراچی خطرناک ٹائیفائیڈ بخار کی لپیٹ میں

اس کے علاوہ پھل، سبزیاں اور برتنوں کو گرم پانی سے دھویا جائے،کھانے سے قبل صابن سے ہاتھ دھوئیں، باہر کے کھانے نہ کھائیں اور بیت الخلاجانے کے بعد ہاتھ صابن سے دھوئیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎