بھارتی وزیراعظم کی موجودگی میں خاتون وزیر ہراسانی کا شکار

بھارتی ریاست تری پورہ میں نریندرا مودی کی موجودگی میں خاتون وزیر کو ہراساں کیا گیا۔


افتتاحی تقریب کے دوران ریاستی وزیر خاتون ساتھی کو غلط طریقے سے چھوتے نظر آئے، ریاستی وزیراعلیٰ بپلب دیو بھی موجود تھے، بی جے پی روایتی ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ملوث وزیر کو ہٹانے سے انکار کردیا۔

دنیا کے سب سے بڑے جمہوری ملک کے دعویدار بھارت میں خواتین کتنی محفوظ ہیں، یہ تو سب ہی جانتے ہیں مگرتازہ واقعہ نے یہ حقیقت پوری طرح آشکار کر دی ہے۔

ذرا غور سے دیکھیے بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی تری پورہ میں ایک منصوبے کا افتتاح کر رہے ہیں، اسٹیج پر ریاستی وزیر منوج کانتی دیب اپنی ہی جماعت بی جے پی کی خاتون وزیر کو غلط طریقے سے چھوتے ہوئے نظرآرہے ہیں۔

وڈیومیں دیکھاجاسکتا ہے سماجی بہبوداورتعلیم کی وزیر سنتنا چکما نے ساتھی وزیر کا ہاتھ ہٹا دیا اس واقعہ پر اپوزیشن جماعتوں نےمنوج کانتی دیب کو برطرف کرکے گرفتار کرنے کامطالبہ کیا ہے، بائیں محاذ کے کنوینر بجن دھر کہتے ہیں، مودی جی کی موجودگی میں یہ سب بے حدشرمناک ہے۔

لیکن منوج کانتی دیب بضد ہیں کہ انہوں نے کچھ غلط نہیں کیا یہی ہیں بی جے پی نے بھی اپوزیشن کی جانب سے اپنے وزیر کو برطرف کرنے کا مطالبہ مسترد کر دیا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎