کرتارپور راہداری پر پاک بھارت مذاکرات آج ہوں گے

پاکستان اور بھارت کے درمیان کرتارپور راہداری سے متعلق مذاکرات آج 14 مارچ کو اٹاری کمپلیکس بھارت میں ہو رہے ہیں۔


جنوبی ایشیا اور سارک امور کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر محمد فیصل کی قیادت میں پاکستانی وفد مذاکرات میں شرکت کے لیے واہگہ کے راستے بھارت روانہ ہوا۔

روانگی سے قبل ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل کا کہنا تھا کہ پاکستان نے کرتارپور کھولنے کا فیصلہ کیا، اب ہم مذاکرات میں مثبت پیغام لے کر جا رہے ہیں اور امید ہے بھارت بھی مثبت قدم آگے بڑھائے گا۔

کرتارپور راہداری سمجھوتہ، پاکستانی وفد 14 مارچ کو نئی دہلی کا دورہ کریگا

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاک بھارت کشیدگی میں کمی خطے میں امن کےلیے ضروری ہے۔

بھارت کے سرحدی علاقے اٹاری میں ہونے والے مذاکرات صبح 9 سے شام 5 بجے تک جاری رہیں گے۔ پاکستانی وفد آج بات چیت کے بعد وطن واپس لوٹے گا۔

پاکستانی وفد وطن واپسی کے بعد واہگہ بارڈر پر میڈیا کو مذاکرات میں ہونے والی پیشرفت سے آگاہ کرے گا۔

گردوارا کرتارپور میں بابا گرونانک کا مزار مسلمانوں نے کیوں تعمیر کیا

پاکستان اور بھارت کے فنی ماہرین کا اجلاس بھی اٹاری میں ہوگا۔ ماہرین راہداری کی تعمیر اور سڑک سے متعلق امور اور دیگر تکنیکی جزئیات کاجائزہ لیں گے۔

اس کے علاوہ کرتارپور راہداری پر مذاکرات کےلیے ایک بھارتی وفد اس ماہ کی 28 تاریخ کو پاکستان آئے گا۔ پاکستان پہلے ہی کرتار پور راہداری کے معاہدے کا مسودہ بھارت کو بھیج چکا ہے۔

کرتارپور راہداری اس سال بابا گرو نانک کی 550 ویں سالگرہ کے موقع پر کھلنے کا امکان ہے۔ گرو بابا نانک کا یوم پیدائش 16 اپریل کو منایا جاتا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎