پنجاب اسمبلی کے ارکان کی تنخواہیں بڑھانے پر وزیراعظم کا اظہارِ مایوسی

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے پنجاب اسمبلی کے اراکین کی تنخواہیں بڑھانے پر شدید مایوسی کا اظہار کیا گیا ہے۔


ارکان پنجاب اسمبلی کی جانب سے تنخواہیں بڑھانے پر وزیراعظم عمران خان نے اپنی ایک ٹویٹ میں کہا کہ اراکین اسمبلی، وزراء اور خصوصاً وزیراعلیٰ کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کا فیصلہ انتہائی مایوس کن ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان خوشحال ہو جائے تو شاید یہ قابلِ فہم ہو مگر ایسے میں جب عوام کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کےلیے بھی وسائل دستیاب نہیں، یہ فیصلہ بالکل بلاجواز ہے۔

پنجاب اسمبلی اراکین کی تنخواہیں 2 لاکھ تک بڑھانے کا بل منظور

گزشتہ روز پنجاب اسمبلی کے اراکین نے تنخواہیں بڑھانے کا بل منظور کیا تھا جس کے مطابق ہر رکن اسمبلی کم سے کم 2 لاکھ روپے ماہانہ تنخواہ وصول کرے گا جبکہ اسمبلی سیشن میں آنے اور دیگر مراعات اسکے علاوہ ہوں گی۔

وزیراعظم کے ٹویٹ سے قبل وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بیان دیا تھا کہ ارکان اسمبلی کی تنخواہیں بڑھانے کا فیصلہ بہترین ہے۔ ویزراعظم کی ٹویٹ کے بعد وزیر اطلاعات نے بھی ٹویٹ میں تنخواہیں بڑھانے کے فیصلے کو وزیراعظم کی پالیسی سے متصادم قرار دیا۔

اپنی تازہ ٹویٹ میں فواد چوہدری نے کہا کہ وزیر اعلیٰ اور پنجاب اسمبلی کے خود کو نوازنے کے اقدامات وزیر اعظم اور وفاقی حکومت کی پالیسیز سے متصادم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی پالیسی کا صریحاً مذاق اڑایا گیا ہے، امید ہے اس پالیسی پر فوری نظرثانی کی جائے گی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎