پشاور: بے نامی بینک اکاؤنٹ چلانے والا ملزم گرفتار

وفاقی تحقیقاتی ادارہ ( ایف آئی اے) نے پشاور میں کارروائی کرتے ہوئے بے نامی اکاؤنٹ چلانے والے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے۔ ملزم فضل خان کے مختلف بینکوں میں 35 بے نامی اکاونٹس تھے۔


ایف آئی اے حکام کے مطابق کارروائی پشاور کے علاقہ مال روڈ پر کی گئی جہاں سے ملزم فضل خان کو دھرلیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ ملزم فضل خان مختلف بینکوں میں 35 بے نامی اکاونٹس چلاتا تھا جن میں بینکوں سے 9 ارب روپے کی ٹرانزیکشن ہوئی ہے۔

ایف آئی اے ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم فضل خان حوالہ ہنڈی کے کاروبار میں ملوث ہے۔ اس کے پاس دوبئی اور سعودی عرب سمیت دیگر خلیجی ممالک سے ہنڈی کے ذریعے پیسے آتے اور وہ ان پیسوں کو آگے مختلف اکاؤنٹس میں جمع کراتا تھا۔

ایف آئی اے نے ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر کے کارروئی شروع کر دی ہے۔

قبل ازیں 5 نومبر کو ایف آئی اے نے پشاور میں 35 بے نامی اکاؤنٹس سے 10 ارب روپے کی ٹرانزیکشن کا انکشاف کیا تھا اور یہ تمام اکاؤنٹس 8 گھریلو ملازمین کے نام پر تھے۔

ایف آئی کے مطابق ان لوگوں کی ماہانہ آمدنی بارہ سے پندہ ہزار تک ہے جبکہ ان کے نام پر چلنے والے اکاؤنٹس منی لانڈرنگ میں استعمال ہو رہے تھے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎