کوٹ لکھپت جیل میں نوازشریف سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تفتیش بھی ہوگی

کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف سے اب سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تفتیش بھی ہوگی۔ اس حوالے سے پنجاب پولیس نے احتساب عدالت سے اجازت حاصل کرلی ہے کہ تفتیشی ٹیم کو میاں نوازشریف سے ملنے دیا جائے، جج ارشد ملک نے احکامات بھی جاری کردیئے ہیں۔


العزیزیہ ریفرنس میں سزا یافتہ نواز شریف کوسانحہ ماڈل ٹاؤن پر بھی تفتیش کے عمل سے گزرنا ہوگا۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے پنجاب پولیس کو میاں نوازشریف سے جیل میں تفتیش کی اجازت دے دی ہے۔

جیل میں ملزم تک رسائی کی استدعا میں ڈی ایس پی پنجاب پولیس محمد اقبال نے مؤقف اپنایا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے وقت نواز شریف وزیر اعظم تھےاور ایف آئی آر میں نامزد ملزم بھی ہیں۔

نیب کے وکیل نے اعتراض اٹھایا کہ پنجاب پولیس کی درخواست کا متعلقہ فورم ہائیکورٹ ہے ۔ احتساب عدالت میں نیب کا اعتراض مسترد کردیا گیا ہے۔ جج ارشد ملک نے تفتیشی ٹیم کو کوٹ لکھپت جیل میں نواز شریف تک رسائی دینے کا حکم جاری کردیا ہے۔

سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تفتیشی ٹیم رانا ثنا اللہ ، خواجہ آصف اور پرویز رشید کا بیان پہلے ہی ریکارڈ کرچکی ہے جبکہ اس وقت کے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف بھی اپنا تحریری بیان بھی جمع کروا چکے ہیں۔

اس کیس میں جوابات دینے کی باری اب سابق وزیر اعظم نواز شریف کی ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎