خیبرپختون خوا میں پولیو سے بچاؤ کے خطرے نہ پلانے والے والدین کے شناختی کارڈ بلاک کرنے پرغور

خیبرپختونخوا حکومت نے اس فیصلے پر غور شروع کردیا ہے کہ جن والدین نے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے نہیں پلائے،ان کا شناختی کارڈ بلاک ہوسکتا ہے۔


حکومتی ترجمان شوکت یوسفزئی نے بتایا ہے کہ پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے سے انکار پر والدین کے خلاف کارروائی پر غور ہورہا ہے، ان والدین کا شناختی کارڈ بلاک بھی ہوسکتا ہے۔

خیبر پختونخوا کے 14 اضلاع میں 3000 ایسے والدین کی نشان دہی ہوئی جنھوں نے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے سے انکار کردیا تھا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ بلاک کئے گئے شناختی کارڈ صرف ڈپٹی کمشنر کی تصدیق کے بعد ہی بحال ہوسکیں گے۔ انھوں نے مزید کہا کہ پولیو سے بچاؤ کے قطرے نہ پلانا دہشت گردی ہے اور شناختی کارڈ بلاک کرنے سمیت ہر قدم اٹھائیں گے۔

اس کے علاوہ، وزیراعظم کے معاون بابر عطا نے مبینہ طور پر بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے بغیر انگلی پر نشان لگانے والی خاتون ورکر کی ویڈیو شیئر کردی ہے۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ خاتون ورکر گلی میں موجود بچوں کے ہاتھوں کی انگلی پر مارکر سے نشان لگا رہی ہے ۔

بابر عطا نے کہا ہے کہ اسٹیٹس کو ملک میں پولیو کے خلاف مہم کو ناکام بنا رہا ہے ۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎