ملازمت پیشہ خواتین کو ہراساں کرنے سے متعلق قوانین کی تشریح کیلئے اٹارنی جنرل عدالت طلب

سپریم کورٹ نے ملازمت پیشہ خواتین کی ہراسگی سے متعلق قوانین کی تشریح کے لئے اٹارنی جنرل کو معاونت کے لئے طلب کرلیا، جسٹس عظمت سعید کہتے ہیں ہمیں دیکھنا پڑے گا کہ وفاقی قوانین صوبوں میں موجود وفاقی اداروں میں لاگو ہوں گے یا نہیں۔


جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے ملازمت پیشہ خواتین کی ہراسگی سے متعلق قوانین کی تشریح کے معاملے پر سماعت کی، عدالت نے نوٹس جاری کرتے ہوئے کہا کہ اٹارنی جنرل اگلی سماعت پر عدالت کی معاونت کریں۔

فریقین کے وکلا کو ہدایت کی گئی کہ معاملہ صوبائی ہے یا وفاقی مل کر اس کا حل نکالیں اوراگلی سماعت پر تمام ایڈووکیٹ جنرل تیاری کے ساتھ آئیں۔

جسٹس سجاد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سروسز قوانین میں کوئی چیز ہراسگی سے متعلق نہیں، جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دئیے کہ اس قانون میں بین الاقوامی سطح پر ہراسگی کے قوانین موجود ہیں،ہمیں دیکھنا پڑے گا کہ وفاقی قوانین صوبوں میں لاگو ہوں گے یا نہیں۔

عدالت نے کیس کی سماعت یکم اپریل تک ملتوی کردی۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎