چینی اور بچوں کے کھلونے بھی زہریلے ہونے کا انکشاف

چینی میں کینسر کا باعث بننے والے کیمیکل کی ملاوٹ جبکہ بچوں کے کھلونے اسپتالوں کے درآمدی فضلے سے بنائے جانے کا انکشاف ہوا ہے، سینیٹ کی قائمہ کمیٹی نے وزارت سائنس و ٹیکنالوجی سے رپورٹ طلب کرلی۔


سینیٹ کی قائمہ کمیٹی سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں تہلکہ خیز انکشافات ہوا ہے کہ عوام کے کھانے پینے میں زیر استعمال چینی بھی زہریلی جبکہ کھیلنے کیلئے معصوم بچوں کو ملنے والے کھلونے بھی زہریلے ہیں۔

قائمہ کمیٹی نے حقائق کا پتہ چلانے اور ذمہ داران کا تعین کرنے کی ٹھان لی ٹاسک وزارت کے سپرد کردیا ۔

کمیٹی چیئرمین سینیٹر مشتاق احمد نے کہا کہ ہم نے پی ایس کیو سی اے اور پی سی ایس آئی آر کی ڈیوٹی لگائی ہے کہ اس چیز کو چیک کریں کہ بچوں کے کھلونے کیا واقعی امپورٹڈ ہاسپٹل میٹیریل ویسٹ سے بن رہے ہیں اور کیا واقعی ہماری جو چینی ہے شوگر ملز اس میں ایسے اجزاء کیمکلز ڈال رہے ہیں جو کینسر کا باعث بن رہے ہیں ۔

کمیٹی کو محکموں میں بے ضابطگیوں اور گھپلوں کا سلسلہ نہ رکنے پر بھی تشویش ہے ، کمیٹی ممبر کامران مائیکل کا کہنا تھا کہ محکمہ جاتی انکوائریز سست روی کا شکار ہیں اکثر پسندیدگی اور نا پسندیدگی کا اظہار ہوتا ہے افسران کچھ ماتحت عملے کے ساتھ تعصب برتتے ہیں اور بعض افسران اپنے ساتھی افسران کو بچانے کی کوشش کرتے ہیں ۔

چینی اور کھلونے زہریلے ہونے سے متعلق رپورٹ آئندہ اجلاس میں طلب کرلی گئی ہے جبکہ محکمہ جاتی انکوائریز نظام پر سوال اٹھا تے ہوئے نیا تفتیشی محکمہ بنانے کا عندیہ بھی دے دیا گیا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎