نیوزی لینڈ حملہ: بنگلہ دیشی ٹیم بال بال بچ گئی

بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے مینیجر خالِد مسعود کا کہنا ہے کہ نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجد پر حملے کے دوران بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم مسجد سے چند منٹ کے فاصلے پر تھی۔


انہوں نے بتایا کہ جب فائرنگ شروع ہوئی تو کھلاڑیوں کی بس مسجد النور سے پچاس گز کے فاصلے پر تھی اور کھلاڑی مسجد جا رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ہم پانچ منٹ پہلے وہاں پہنچ جاتے تو پتہ نہیں کیا ہوتا۔

انہوں نے بتایا کہ ٹیم کی پریس کانفرنس کافی دیر تک چلی اور تاخیر کے بعد ٹیم مسجد جا رہی تھی۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے ترجمان جلال یونس کا کہنا ہے کہ ٹیم کے زیادہ تر کھلاڑی بس میں مسجد گئے تھے اور اس وقت مسجد کے اندر جانے والے تھے جب یہ واقعہ پیش آیا۔

انھوں نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا 'وہ محفوظ ہیں، لیکن وہ صدمے میں ہیں۔ ہم نے ٹیم سے کہا ہے کہ وہ ہوٹل میں ہی رہیں۔'

نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کے آفیشیل ٹوئٹر اکاؤنٹ کے مطابق حملے کے پیشِ نظر بنگلہ دیش کی ٹیم کا دورہ منسوخ کر دیا گیا ہے اور دونوں ٹیموں کے درمیان ہیگلی اوول میں کھیلا جانے والا ٹیسٹ میچ بھی اب نہیں ہوگا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎