وزیراعظم کا باجوڑ کیلئے کئی ارب روپے کے پیکیج کا اعلان

وزیراعظم نے باجوڑ کے نوجوانوں کیلئے بلاسود سستے قرضے کا اعلان کردیا، کہتے ہیں کہ بہت جلد علاقے میں بجلی کا مسئلہ بھی حل کردیں گے، فاٹا یونیورسٹی کا کیمپس باجوڑ اور مہمند میں کھلے گا، سیاحت کے فروغ کیلئے قبائلی اضلاع کو سوات ایکسپریس وے سے ٹنل کے ذریعے جوڑیں گے۔ عمران خان نے کہا کہ منی لانڈرنگ کرنیوالوں سے کوئی ڈیل نہیں ہوگا، مستقبل میں کوئی این آر او نہیں ہوگا۔


وزیراعظم عمران خان قبائلی علاقوں کے خیبرپختونخوا سے انضمام کے بعد پہلی بار باجوڑ پہنچے، جہاں انہوں نے ایک بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ این ایف سی ایوارڈ میں سے 3 فیصد قبائلی علاقے پر خرچ کریں گے، باجوڑ کے نوجوانوں کیلئے 2 ارب روپے کی روزگار اسکیم لارہے ہیں، نوجوانوں کو اپنے کاروبار کیلئے سود کے بغیر سستے قرضے دیں گے، علاقے میں انٹرنیٹ سروس بھی فراہم کی جائے گی، فاٹا یونیورسٹی کے کیمپس باجوڑ اور مہمند میں کھیلیں گے۔

وہ کہتے ہیں کہ بہت جلد علاقے میں بجلی کا مسئلہ حل کردیں گے، سولر اور ہائیڈل گرڈ اسٹیشن بن رہے ہیں، سولر سسٹم کے ذریعے 300 مساجد کو بلاتعطل بجلی ملے گی، قبائلی اضلاع میں تعلیم اور صحت کے شعبے میں ساڑھے 8 ہزار نئی نوکریاں دیں گے، یہ علاقہ بہت خوبصورت ہے، سیاحت کے فروغ کیلئے اسے سوات ایکسپریس وے سے ٹنل کے ذریعے جوڑیں گے، سیاحت سے بھی روزگار میں اضافہ ہوگا۔

عمران خان نے کہا بڑا انڈسٹریل زون بنانے میں زیادہ وقت لگے گا، حکومت نے کاٹیج انڈسٹریل زون بنانے کا فیصلہ کیا ہے، نوجوانوں کو تکنیکی تربیت دیں گے جس سے ان کی صلاحیتوں میں مزید اضافہ ہوگا، باجوڑ سمیت پورے قبائلی علاقوں میں صحت کارڈ لے کر آرہے ہیں، ہر گھر میں ایک صحت کارڈ ہوگا، خاندان 7 لاکھ 20 ہزار روپے تک کا علاج کراسکے گا۔

وہ بولے کہ قبائلی علاقے کا صوبے میں انضمام آسان نہیں، تبدیلی آنے میں کچھ وقت لگے گا، آپ کے قبائلی علاقے میں لوگ انتشار پھیلانے کی کوشش کریں گے، ملک دشمن مشکلات پیدا کریں گے، نوجوان سازشوں کو ناکام بنائیں، انضمام سے پورے قبائلی علاقے کا مستقبل روشن ہوگا۔

انہوں نے واضح کیا کہ منی لانڈرنگ کرنے والوں سے کوئی ڈیل نہیں ہوگا، مستقبل میں کوئی این آر او نہیں ہوگا، 60 سالوں میں پاکستان کا قرضہ 6 ہزار ارب اور 10 سالہ پارٹنر شپ میں 30 ہزار ارب روپے ہوگیا، جمہوریت نہیں بڑے بڑے ڈاکو خطرے میں ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستانی حکمران نفرت پھیلا کر الیکشن جیتنا چاہتے ہیں، ہماری ایئر فورس نے صحیح طور پر ملک کا دفاع کیا، ہم سب کے ساتھ امن چاہتے ہیں، ہم اپنے لوگوں کیلئے خوشحالی لانا چاہتے ہیں۔ عمران خان نے واضح کیا کہ ہم جنگ نہیں امن چاہتے ہیں تاہم اسے کوئی بھی غلطی سے کمزوری نہ سمجھے، کشمیر پر بھارتی ظلم کو ساری دنیا دیکھ رہی ہے، کشمیریوں کو سلام پیش کرتا ہوں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎