یورپی ممالک کا کرائسٹ چرچ میں مساجد پر حملوں پر افسوس کا اظہار

یورپی ممالک نے بھی نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں مساجد پر حملوں کی مذمت کردی۔


نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی 2 مساجد پر دہشت گردوں نے حملہ کردیا، جس میں 49 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، شہداء میں کئی ممال کے شہری شامل ہیں جبکہ 4 پاکستانی زخمی اور 5 لاپتہ ہیں۔

برطانوی وزیراعظم تھریزا مے نے کرائسٹ چرچ میں دہشت ناک دہشت گردانہ حملے پر نیوزی لینڈ کے عوام کے ساتھ انتہائی گہری ہمدردی کا اظہار کیا، انہوں نے کہا کہ میری ہمدریاں ان تمام لوگوں کے ساتھ ہیں جو تشدد کے ہولناک عمل سے متاثر ہوئے۔

روسی صدر ولادی میر پوٹن کہتے ہیں کہ نماز کیلئے جمع ہونیوالے پر امن لوگوں پر حملہ سفاکی، بربریت اور دہشت خیز ہے۔ نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم کے نام اپنے پیغام میں انہوں نے مزید کہا کہ مجھے امید ہے کہ ذمہ داروں کو انتہائی سخت سزا دی جائے گی۔

جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے واقعے پر شدید غم کا اظہار کیا، بولیں کہ مساجد میں عبادت کرتے ہوئے پر امن لوگوں پر نسل پرستانہ اور نفرت پر مبنی حملہ افسوسناک ہے۔

یورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹُسک نے اس حملے کو نیوزی لینڈ سے ملنے والی خوفناک خبر قرار دیا، بولے یہ وحشیانہ حملہ نیوزی لینڈ کی عوام کی اس برداشت اور شائستگی میں کمی نہیں لا پائے گا، جس کیلئے وہ شہرت رکھتے ہیں۔

فرانسیسی صدر ایمانویل ماکروں نے نفرت انگیز حملے کی مذمت کی اور کہا کہ فرانس کسی بھی طرح کی شدت پسندی کے خلاف ہے۔

اسپین کے وزیر اعظم پیدرو سانچیز نے کہا کہ یہ حملہ ہمارے معاشروں کو تباہ کرنے کے خواہشمند متعصب اور شدت پسندوں نے کیا، ہماری ہمدردیاں نیوزی لینڈ کے متاثرین کے ساتھ ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎

مقبول ٹیگ‎‎‎