کیا آسیہ بی بی آزاد ہے؟ اور کیا وہ ملک چھوڑ کے جا سکتی ہے؟ وزیر خارجہ کا اہم بیان

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ آسیہ بی بی اس وقت پاکستان میں ہیں اور آزاد ہیں ، وہ ملک چھوڑنا چاہے تو چھوڑ سکتی ہے۔


برطانوی نشریاتی ادارےکو انٹر ویو دیتے ہوئے شاہ محمود قریشی کاکہنا تھا کہ آسیہ بی بی کی بریت کےفیصلے کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو صاف پیغام دیا، ریاست کی رٹ کو چیلنج نہیں کرنے دیں گے۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ آسیہ بی بی آزاد ہے، وہ ملک چھوڑنا چاہے تو چھوڑ سکتی ہے، اگر پاکستان میں رہنا چاہے تو حکومت تحفظ فراہم کرے گی،پاکستان چھوڑنے کا فیصلہ آسیہ بی بی کا اپنا ہوگا۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دورہ برطانیہ کا مقصد عالمی برادری کے سامنے کشمیریوں کی آواز بلند کرنا ہے، اقوام متحدہ انسانی حقوق کے کمشنر کی رپورٹ نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو اجاگر کیا ، بھارت مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کی گمراہ کن منظر کشی کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن و خوش حالی کا خواہاں ہے، ہم نےآزاد جموں کشمیر میں سب کو رسائی دی ہوئی ہے،ہمارے پاس چھپانے کو کچھ نہیں ہے، بھارت مقبوضہ کشمیر میں ظلم و ستم چھپانے کے لیے رسائی نہیں دیتا۔

افغانستان سے متعلق سوال پر شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان ہمیشہ سے کہتا رہا ہے کہ افغان مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں، افغان مسئلے کا واحد حل مذاکرات کے ذریعے سیاسی مفاہمت ہے، فوجی طاقت سے افغانستان میں امن قائم نہیں ہوسکتا،پاکستان افغان مسئلے کے پُرامن حل کے لئے سہولت کاری جاری رکھے گا۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان کو اپنی سرحد کے اندر ابھی بہت کچھ کرنا ہے،دہشت گردوں کی پناہ گاہیں باقی ہیں تو افغانستان میں ہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎