ترک سرمایہ کاروں نے کن منصوبوں میں دلچسپی کا اظہار کیا، وزیر خارجہ نے بتا دیا

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وزیراعظم کے دورہٗ ترکی کو مختصر، مفید اور کامیاب قرار دیا ہے، کہتے ہیں کہ ترک سرمایہ کاروں نے پاکستان میں کم قیمت گھروں کی تعمیر کے منصوبے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے، بھارت اپنی غلط پالیسیوں اور حکمت عملی سے مقبوضہ کشمیر اور کشمیریوں کو کھو بیٹھا ہے، افغان مسئلے کا حل مذاکرات ہی ہیں۔


اسلام آباد میں میڈیا گفتگو میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان اور ترک صدر رجب طیب اردوان کے درمیان زبردست انفرادی ربط قائم ہوگیا، دورہ ترکی مفید اور کامیاب رہا، ترک صدر جلد پاکستان کا دورہ کریں گے، ان کے ہمراہ ترک سرمایہ کار بھی پاکستان آئیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم اور ترک صدر کے درمیان طے شدہ نصف گھنٹے کی ون ٹو ون ملاقات دو گھنٹے سے زائد جاری رہی، وفود کی سطح پر دو طرفہ بات چیت ہوئی، ترک پاکستان بزنس کونسل کی بھی بیٹھک لگی جبکہ وزیراعظم نے انقرہ چیمبر اور کموڈٹی ایکس چینج کا دورہ بھی کیا۔

شاہ محمود قریشی کہتے ہیں کہ ترکی کے ساتھ ہمارے گہرے مراسم ہیں، پاکستان اور ترکی کے درمیان سیاسی تعلقات بہت اچھے ہیں مگر معاشی تعلقات سیاسی تعلقات جیسے نہیں، اگلے 5 سال کیلئے اپنا ایک روڈ میپ بنائیں گے۔

وزیر خارجہ نے بتایا کہ اسکولوں پر پابندی کے حکومتی فیصلے کو ترک حکومت نے سراہا، ترک قیادت نے فتح اللہ گولن کی تنظیم کو دہشتگرد قرار دیا، پاکستان نے بھی فتح اللہ گولن کی تنظیم کو دہشت گرد قرار دے دیا۔

بھارتی قیادت کے پاکستان مخالف پروپیگنڈے پر ان کا کہنا تھا کہ بھارتی قیادت کو ایک پیغام دینا چاہتا ہوں کہ ہمیں عوام کی یکجہتی پر مکمل اعتماد ہے، جس طرح کے پروپیگنڈا کو بھارت ہوا دے رہا ہے وہ غیر ذمہ دارانہ ہے، اگر کوئی جارحانہ کارروائی کی گئی تو پاکستان فی الفور اور بھرپور جواب دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎