حالیہ تاریخ میں 1972 کو طویل ترین سال کیوں قرار دیا جاتا ہے؟

ہر سال میں 365 دن ہوتے ہیں اور اگر لیپ ائیر ہو تو 366 ہوجاتے ہیں تو پھر ایسی کیا بات ہے جو 1972 کو حالیہ تاریخ کا طویل ترین سال قرار دیا جاتا ہے؟


اس کے پیچھے چھپی بہت دلچسپ اور ذہن گھما دینے والی ہے۔

ویسے 1972 وہ سال تھا جب پاکستان کے قیام کو 25 سال مکمل ہوئے تھے اور یہی وہ برس ہے جب آخری بار انسان نے چاند پر چہل قدمی کی تھی۔

اسی سال فلم گاڈ فادر نے اکیڈمی ایوارڈ اپنے نام کیا تھا تو ایسی کیا بات ہے جو اسے طویل ترین سال قرار دیا جاتا ہے؟

درحقیقت 1972 پورے 2 اضافی سیکنڈ کی بدولت یہ اعزاز اپنے نام کرنے میں کامیاب ہوا۔

یعنی 1972 میں لیپ ائیر یعنی 29 فروری کا دن شامل تھا یعنی بیشتر برسوں کے مقابلے میں 24 گھنٹے زیادہ تھے مگر اس کے ساتھ ساتھ 2 اضافی سیکنڈز بھی اس برس کا حصہ بنے۔

آسان الفاظ میں 1972 میں 2 لیپ سیکنڈز شامل کیے گئے تھے جن میں سے ایک 30 جون اور دوسرا 31 دسمبر کو گھڑیوں کا حصہ بنا۔

لیپ ائیر کا مقصد زمین کی گردش سے بالکل وقت بتانے والی گھڑیوں کو ملانا ہے جو کہ چاند اور سورج کی کشش ثقل سے متاثر ہوتی ہیں۔

دنیا کے اربوں افراد میں سے بہت کم لوگوں کو اس اضافی سیکنڈ کا علم ہوتا ہے اور 1972 پہلا سال تھا جب لیپ سیکنڈ کا اطلاق شروع ہوا تھا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎