سرفراز احمد کے جملوں پر افریقی کپتان کا موقف بھی سامنے آگیا

پاکستان ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کو نسلی تعصب پر مبنی ریمارکس کہنے پر جنوبی افریقی کپتان فاف ڈو پلیسی نے اُنہیں معاف کردیا۔


جنوبی افریقی کپتان فاف ڈوپلیسی نے پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ ٹیم نے سرفراز احمد کی معافی قبول کرلی ہے۔

فاف ڈیو پلیسی نے مزید کہا کہ جنوبی افریقہ آ کر آپ کا نسل پرستانہ جملوں کے حوالے سے بہت زیادہ محتاط ہونا چاہیے۔ مجھے یقین ہے کہ ان کے کہنے کا مطلب ہرگز یہ نہیں ہو گا لیکن انہوں نے ذمے داری قبول کر لی ہے اور اب ہمیں دیکھنا ہو گا کہ اس کا کیا نتیجہ برآمد ہوتا ہے۔

جنوبی افریقی قائد نے کہا کہ ایسا نہیں ہم اس معاملے کو اہمیت نہیں دے رہے بلکہ اصل بات یہ ہے کہ سرفراز نے معافی مانگ لی ہے جس کا مطلب ہے کہ انہیں اپے کیے پر پچھتاوا ہے۔

ڈیو پلیسی نے انکشاف کیا کہ فلکوایو کو تو پتہ بھی نہیں چلا کہ سرفراز نے کیا کہا ہے اور انہیں تو پتہ بھی نہیں چلا کہ سرفراز نے انہیں مخاطب کر کے کچھ کہا۔

’ہم کافی رحمدل ہیں، اگر دوسری جانب آسٹریلین ٹیم نہ ہو تو ہم آسانی سے معاف کر دیتے ہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ سرفراز نے معافی مانگ لی جس کو ٹیم نے قبول کرلیا ہے، لیکن معاملہ اب آئی سی سی کے پاس ہے۔

دوسری میچ ریفری رنجن مدوگالے نے سرفراز کے معاملہ پر اپنی رپورٹ پیش کردی ہے اور آئی سی سی اس رپورٹ کا تجزیہ کر رہا ہے۔

قوانین کے مطابق رپورٹ کے بعد اب آئی سی سی کا لیگل ڈپارٹمنٹ اس بات کا تعین کرے گا کہ کیس بنتا ہے یا نہیں۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎