سعودی عرب، دبئی اورقطر کے بعد جانئے کس نے پاکستان میں بھاری سرمایہ کاری کا اعلان کر دیا

 اسلام آباد میں ایشئین انفرااسٹرکچر انویسمنٹ بینک کی ہیڈ آف کمیونیکیشن مس لورل اوسٹی فیلڈ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ پاکستان کی معیشت اس وقت غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہے۔ جس کی وجہ بڑھتے ہوئے قرضے اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ہے ۔ غیریقنی کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے پاکستان کی پالیسیاں غیر واضح ہیں


ایشئین انفراسٹرکچر بینک نے پاکستان میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کا فیصلہ کرلیا ہے، کراچی بس ٹرانزٹ100 ملین امریکی ڈالر،لاہور ویسٹ واٹر مینجمنٹ 400 ملین ڈالر، راولپنڈی رنگ روڈ402 ملین ڈالر، کراچی واٹراینڈ سیوریج 160 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری زیرغور ہے،پاکستان کی معاشی پالیسی غیرواضح ہے، واضح پالیسی پر قرض جاری کرسکیں گے۔

گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ آئی ایم ایف کے اپنے تقاضے ہیں، آئی ایم ایف کے پاس جائیں گے توان کی شرائط کو دیکھا جائے گا۔ واضح رہے گزشتہ روزاسٹیٹ بینک کی مالی سال2019ء کی پہلی سہ ماہی رپورٹ کے مطابق پہلی سہ ماہی کے دوران مجموعی معاشی ماحول دشوار رہا، جس کی عکاسی ابتدائی ڈیٹا سے ہوتی ہے۔ اہم خدشہ خام تیل کی عالمی قیمتوں میں مسلسل اضافہ تھا جو نہ صرف معیشت میں مہنگائی کے پہلے سے موجود مضبوط مخفی دباو کو بڑھانے کا سبب بنا بلکہ اس نے بیرونی شعبے میں آنے والی بہتری کا اثر بھی زائل کر دیا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎