پنجاب پولیس کی وردی پر ایک بارپھریوٹرن

لاہور: (روزنامہ دنیا) پنجاب پولیس کی وردی کا معاملہ ایک دفعہ پھر طول پکڑ گیا، آئی جی پولیس نے ایک دفعہ پھر یوٹرن لے لیا،پرانی وردی بحال نہ کرنے پر آئی جی سمیت دیگر افسران متفق ہوگئے۔


ذرائع کے مطابق پرانی وردی میں شامل کالا رنگ دہشت کی علامت ہے جسکی وجہ سے اسے دوبارہ مسترد کیا گیا ہے۔ آئی جی نے پنجاب پولیس کی وردی کو حتمی شکل دینے کیلئے کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ پولیس افسران پر مشتمل کمیٹی کے سربراہ ڈی آئی جی ذوالفقار حمید ہونگے اور وردی تبدیلی کے معاملے کوحتمی شکل دینے کیلئے جولائی تک کا ٹارگٹ دے دیا گیا ہے۔ ڈی آئی جی ذوالفقار حمید محکمانہ کورس مکمل کر کے 15 دسمبر کو واپس آئے ہیں جنہیں یہ ذمہ داری سونپی گئی ہے، اس سے پہلے انہیں سی سی پی او لاہور بھہی تعینات کیا گیا تھا۔

یونیفارم کی تبدیلی کے معاملے میں بنائی جانے والی کمیٹی اپنی تمام سفارشات مکمل کر کے آئی جی پنجاب کو بھجوائے گی جسکے بعد کمیٹی کی سفارشات کو ایگزیکٹو بورڈ کے سامنے رکھا جائے گا اور بورڈ کے ممبران تمام سفارشات کو مدنظر رکھتے ہوئے حتمی فیصلہ کریں گے۔ ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ آئی جی پنجاب سمیت دیگر سینئر افسران نے پنجاب پولیس کی وردی میں نیلے رنگ کو شامل کرنے کی سفارش کی ہے۔ سابق آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا کے دور میں پنجاب پولیس کی وردی کو تبدیل کیا گیا تھا جنکے ریٹائر ہونے کے بعد پولیس افسران اور اہلکاروں کی جانب سے وردی اور اسکے رنگ کو مسترد کر دیا گیا تھا۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎