سزا معطلی کی درخواست، عدالت سے نواز شریف کیلئے بڑی خوشخبری

 العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف نواز شریف اور نیب کی اپیلیں بھی سماعت کے لئے مقرر کر دی گئی ہیں۔


اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف کو سزا معطلی کی درخواست میں مزید دستاویزات جمع کرانے کی اجازت دے دی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ میں نیب کی اپیلوں پر سماعت بھی اٴْسی دن ہو گی ۔

 

 سابق وزیر اعظم کی فیصلے کے خلاف اپیل بھی 18 فروری کو سماعت کے لئے مقرر کر دی گئی۔  جمعرات کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل دو رکنی بنچ نے نواز شریف کی درخواست پر سماعت کی۔

سابق وزیر اعظم کے وکیل منور اقبال دٴْگل عدالت میں پیش ہوئے اور استدعا کی کہ وہ سزا معطلی کی درخواست کے ساتھ مزید دستاویزات پیش کرنا چاہتے ہیں۔ احتساب عدالت میں کارروائی کے دوران گواہان اور استغاثہ کی جانب سے پیش کئے گئے شواہد عدالتی ریکارڈ پر لانے کی اجازت دی جائے۔

جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیئے کہ ہم پہلے ہی آپ کو ریکارڈ پیش کرنے کی اجازت دے چکے ہیں اور عدالت خود بھی مقدمے کا تمام ریکارڈ طلب کر چکی ہے۔

آپ کی تحریری درخواست بھی منظور کی جاتی ہے۔ دوسری جانب العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف نواز شریف اور نیب کی اپیلیں بھی سماعت کے لئے مقرر کر دی گئی ہیں۔  نوازشریف نے العزیزیہ ریفرنس میں سزا کو چیلنج کر رکھا ہے جبکہ اپیل پر حتمی فیصلہ آنے تک سزا معطل کرنے کی درخواست بھی دائر کر رکھی ہے۔

عدالت نے محمد نواز شریف کی دونوں درخواستوں پر نیب سے جواب طلب کر رکھا ہے۔



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎