کیا نیب کے علاوہ سارے چور ہیں؟ چیف جسٹس نے چیئرمین نیب کی بینڈ بجا دی

سپریم کورٹ آف پاکستان میں ہسپتالوں کی کمی سےمتعلق از خود نوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایک درخواست پر پگڑیاں اچھالی جاتی ہیں، نیکی کے کام میں نیب ٹانگ اڑا کر بدنامی کررہا ہے۔


اسلام آباد میں ہسپتالوں کی کمی کے کیس میں چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار نے قومی احتساب ادارے (نیب) پربرہمی کااظہار کرتے ہوئے چیئرمین نیب کو چیمبر میں طلب کرلیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ایک درخواست پر لوگوں کی عزت ختم کردی جاتی ہے، کیا نیب کے علاوہ سارے چور ہیں۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا صرف نیب والے سچے ہیں، ادارے کی تحقیقات کا معیار ہے یا نہیں؟

چیف جسٹس نے نیب پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ بحرین حکومت 10 ارب روپے دینا چاہ رہی ہے سی ڈی اے کے لیے عدالتی حکم اہم ہے یا نیب؟

ان کا کہنا تھا کہ ایک درخواست پر لوگوں کی پگڑیاں اچھالی جاتی ہیں، نیب ہر معاملے میں انکوائری کرکے سسٹم روک دیتا ہے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی تذلیل کی جارہی ہے، نیب کی تحقیقات کا کوئی معیار ہے یا نہیں؟



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎