بسنت کے متعلق حکومتی تیاریاں دھری کی دھری رہ گئیں وہی ہوا جس کا خدشہ تھا

پنجاب حکومت کی جانب سے بسنت منانے کا اقدام لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیا، درخواست گزار وکیل کا مؤقف ہے کہ حکومت عوامی مسائل سے توجہ ہٹانے کے لیے بسنت جیسے خونی کھیل کی اجازت دے رہی ہے۔


پنجاب حکومت کی جانب سے بسنت منانے کا اقدام صفدر شاہین پیرزادہ ایڈوکیٹ نے لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا۔

درخواست گزار کا مؤقف ہے کہ بسنت خونی کھیل کی شکل اختیار کرگیا تھا جس کی وجہ سے اس پر پابندی لگائی گئی تھی ،ایسی تفریح جوانسانی جانوں کے ضیاع کا باعث بنے،اس کی اجازت دینا خلاف آئین ہے۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ پتنگ بازی کی وجہ سے ماضی میں اربوں روپے کی قومی املاک کا نقصان ہوا، استدعا ہے کہ عدالت حکومت کی جانب سے بسنت کی اجازت دینے کا اقدام کالعدم قرار دے۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بسنت منانے کے لیے دلچسپی ظاہر کی تھی۔ جس کے تحت وزیراعلیٰ پنجاب نے پتنگ بازی کے تہوار کو منانے کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی ۔ بسنت منانے کا جائزہ لینے والی کمیٹی کے سربراہ وزیرقانون پنجاب راجہ بشارت کو مقرر کیا گیا تھا.



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں‎‎